.

دہشت گرد پاکستان اور امریکا کے دشمن ہیں:جان کیری

امریکی وزیرخارجہ کی بھارت کے بعد غیرعلانیہ دورے پر اسلام آباد آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے وزیرخارجہ جان کیری پاکستان کے دو روزہ غیرعلانیہ دورے پر سوموار کو اسلام آباد پہنچے ہیں۔انھوں نے وزیراعظم میاں نوازشریف سے ملاقات کی ہے۔انھیں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں امریکا کی جانب سے حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

جان کیری بھارت کے دورے کے بعد پاکستان پہنچے ہیں۔ وزیراعظم میاں نواز شریف نے رات ان کے اعزاز میں عشائیہ دیا۔اس موقع پر انھوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ ،دوطرفہ تعلقات اور علاقائی سکیورٹی پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

وزیراعظم میاں نوازشریف نے پشاور میں سولہ دسمبر کو آرمی پبلک اسکول پر حملے کے بعد صدر براک اوباما کے دوستی اور تعاون کے پیغام کو سراہا۔جان کیری نے امریکی حکومت اور عوام کی جانب سے سانحہ پشاور پر تعزیت کا اظہار کیا اور کہا کہ دہشت گرد دونوں ممالک کے مشترکہ دشمن ہیں۔

میاں نواز شریف نے جان کیری سے گفتگو میں پاکستانی مصنوعات کو امریکی منڈیوں میں زیادہ رسائی دینے اور ملک میں امریکی سرمایہ کاری کو بڑھانے کی ضرورت پر زوردیا تا کہ روزگار کے زیادہ مواقع پیدا ہوں۔انھوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ مارچ میں اسلام آباد میں منعقد ہونے والی ''کاروباری مواقع کانفرنس'' کے موقع پر امریکی سرمایہ کاروں کی جانب سے اچھا ردعمل سامنے آئے گا۔

امریکی وزیرخارجہ منگل کو وزارت خارجہ میں پاکستان،امریکا تزویراتی ڈائیلاگ میں اپنے وفد کی قیادت کریں گے۔اس کے بعد وہ جنرل ہیڈ کوارٹرز (جی ایچ کیو) راول پنڈی میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے ملاقات کریں گے اور ان سے دہشت گردی کے خلاف جنگ اور سکیورٹی کے شعبے میں دونوں ملکوں کے درمیان تعاون پر تبادلہ خیال کریں گے۔توقع ہے کہ جان کیری پشاور میں دہشت گردوں کے حملے کا نشانہ بننے والے آرمی پبلک اسکول کا دورہ بھی کریں گے۔

پاکستانی عسکری ذرائع کے مطابق امریکی وزیرخارجہ کو بھارت کی جانب سے پاکستان میں تخریبی سرگرمیوں میں ملوث ہونے سے متعلق انٹیلی جنس رپورٹس سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔ان انٹیلی جنس رپورٹ میں جنگجوؤں کی مالی امداد، تربیت اور انھیں ہتھیار مہیا کرنے سے متعلق ٹھوس شواہد سامنے آئے ہیں۔