.

کرکٹ ورلڈ کپ:پاکستان کی یو اے ای کے خلاف شاندار فتح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کی کرکٹ ٹیم نے آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں کھیلے جارہے عالمی کپ کرکٹ ٹورنا منٹ میں دوسری فتح حاصل کر لی ہے اور اس نے متحدہ عرب امارات کی ٹیم کو 129 رنز سے ہرا دیا ہے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم نے نیپئر میں بدھ کو کھیلے گئے میچ میں پہلے بلے بازی کی اورمقررہ پچاس اوورز میں چھے وکٹ کے نقصان پر 339 رنز بنائے۔اوپنر احمد شہزاد نے شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور 93 رنز بنا کر رن آؤٹ ہوئے۔انھیں میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا ہے۔حارث سہیل 70 اور کپتان مصباح الحق 65 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔یہ ایک روزہ میچوں میں ان کی اکتالیسویں نصف سینچری تھی۔

پاکستان کی شاندار بلے بازی کے جواب میں متحدہ عرب امارات کی ٹیم مقررہ پچاس اوورز میں آٹھ وکٹ کے نقصان پر 210 رنز بنا سکی اور اس طرح پاکستانی بھاری فرق سے میچ جیت گئی ہے۔پاکستانی باؤلروں شاہد آفریدی ،سہیل خان اور وہاب ریاض نے دو،دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

پاکستانی اننگز کا آج بھی آغاز اچھا نہیں ہوا تھا اور اوپنر ناصر جمشید صرف چار رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔اس کے بعد حارث سہیل اور احمد شہزاد نے ذمے دارانہ بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور انھوں نے دوسری وکٹ کی شرکت میں 160 رنز بنائے۔ان کے بعد صہیب مقصود اور کپتان مصباح الحق نے تیز رفتاری سے چوتھی وکٹ کی شراکت میں 75 رنز بنائے۔صہیب نے 31 گیندوں پر 45 رنز بنائے۔اس میں چار چوکے اور دو زوردار چھکے شامل تھے۔

شاہد آفریدی نے سات گیندوں پر 21 رنز بنائے اور ناٹ آوٹ رہے۔ان کی اس مختصر اننگز میں دو چھکے اور ایک چوکا شامل تھا۔اس میچ کے دوران انھوں نے ایک روزہ بین الاقوامی میچوں میں آٹھ ہزار رنز بھی مکمل کر لیے ہیں۔وہ یہ ہندسہ عبور کرنے والے پاکستان کے چوتھے اور دنیا کے ستائیسویں بلے باز بن گئے ہیں۔ان سے پہلے انضمام الحق ،محمد یوسف اور سعید انور پاکستان کی جانب سے کھیلتے ہوئے آٹھ ہزار سے زیادہ رنز بنا چکے ہیں۔

میچ کے بعد پاکستانی کپتان مصباح الحق نے کہا کہ ہمارے لیے یہ جیت بہت ضروری تھی۔ہم بڑے فرق سے یہ میچ جیتے ہیں اور ہمارا رن ریٹ بھی بہتر ہوگیا ہے۔یو اے ای کے کپتان محمد توقیر نے اعتراف کیا ہے کہ ''ان کے لیے اتنا بڑا ہدف حاصل کرنا بہت مشکل تھا۔340 ہمارے لیے ایک بڑا ہدف تھا لیکن ہم نے تمام پچاس اوورز کھیلے ہیں اور ہم اس کوشش پر خوش ہیں۔انھوں نے شیمان انور کی شاندار بلے بازی کی تعریف کی''۔

پاکستان کے خلاف میچ میں بھی یو اے ای کے بلے باز شیمان انور نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور انھوں نے چار چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 62 رنز بنائے۔وہ اب تک چار میچوں میں 270 رنز بنا چکے ہیں اور وہ اس ٹورنا منٹ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی ہیں۔

اس میچ کی جیت کے بعد پاکستان کے چار پوائنٹس ہوگئے ہیں اور اس کو کوارٹر فائنل میں پہنچنے کے لیے اپنے باقی دونوں میچ بھی جتینا ہوں گے۔اس مرتبہ عالمی کپ ٹورنا منٹ میں چودہ ٹیمیں شرکت کررہی ہیں اور انھیں سات ،سات ٹیموں کے دو پول میں تقسیم کیا گیا ہے۔ پاکستان اپنا اگلا میچ 7 مارچ کو آک لینڈ میں جنوبی افریقہ کی ٹیم کے خلاف کھیلے گا اور ایڈی لیڈ میں 15 مارچ کو آئیرلینڈ کے ساتھ اس کا آخری پول میچ ہو گا۔

پاکستانی ٹیم نے اب تک کھیلے گئے چار میچوں میں سے دو میں فتح حاصل کی ہے اور دو میں اسے شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔اس نے اپنے تیسرے میچ میں زمبابوے کی ٹیم کو بیس رنز سے شکست تھی۔ پاکستانی ٹیم نے اپنے پہلے دونوں میچوں میں انتہائی خراب کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور روایتی حریف بھارت کے خلاف اپنا پہلا میچ 76 رنز سے ہار گئی تھی۔ویسٹ انڈیز کے خلاف دوسرے میچ میں اس کو 150 رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا جس پر پاکستانی کھلاڑیوں پر کڑی تنقید کی گئی تھی۔رنز کے اعتبار سے کسی میچ میں یہ پاکستان کی بدترین شکست تھی۔