کرم ایجنسی سے بھارتی خفیہ ایجنسی را کے دو ایجنٹ گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کی سکیورٹی فورسز نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے کرم ایجنسی سے بھارت کی خفیہ ایجنسی ریسرچ اینڈ اینالسیس ونگ (را) کے دو ایجنٹوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

را کے مبینہ ایجنٹوں کو 19 ستمبر کو کرم ایجنسی کے علاقے پاڑاچنار سے گرفتار کیا گیا تھا لیکن انھیں آج منگل کو میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا ہے۔ان دونوں کو سکیورٹی اداروں نے خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر کارروائی کے دوران پکڑا تھا۔

کرم ایجنسی کے اسسٹینٹ پولیٹیکل ایجنٹ شاہد اللہ نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ گرفتار افراد نے تفتیش کے دوران بھارتی ایجنسی را کے لیے کام کرنے کا اعتراف کیا ہے۔وہ شمال مغربی علاقے میں دہشت گردی سے متعلق سرگرمیوں اور فرقہ وارانہ بنیاد پر حملوں میں ملوث تھے۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ ''ہم نے ان کے قبضے سے تین سو ڈالرز اور ایک لاکھ اٹھہتر ہزار بھارتی روپوں کے علاوہ مسلح افواج کی وردیاں برآمد کی ہیں''۔

گذشتہ ہفتے پاکستانی اداروں نے لاہور کے نزدیک واہگہ بارڈر کے علاقے سے را کے دو ایجنٹوں کو گرفتار کیا تھا۔اگست میں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے لاہور ہی سے را سے وابستہ چار مشتبہ ایجنٹوں کو گرفتار کرنے کی اطلاع دی تھی۔

پاکستان کی عسکری قیادت نے مئی میں را پر ملک میں دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے حمایت کا الزام عاید کیا تھا اور کور کمانڈرز کے ایک سابقہ اجلاس میں پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں را کے ملوث ہونے کا نوٹس لیا گیا تھا۔واضح رہے کہ پاکستانی حکام را پر صوبہ بلوچستان میں علاحدگی پسندی اور تخریبی سرگرمیوں ،کراچی میں تشدد کے واقعات اور اب فاٹا میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوّث ہونے کے الزامات عاید کرچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں