.

جنرل راحیل شریف کی خیبرایجنسی میں فوجی جوانوں کے ساتھ عید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان آرمی کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے وفاق کے زیرانتظام قبائلی علاقے خیبرایجنسی میں فوجی جوانوں اور افسروں کے ساتھ عیدالاضحیٰ منائی ہے اور ان کے ساتھ نماز عید ادا کی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)کے ڈائریکٹر جنرل ،لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے ایک ٹویٹ میں لکھا ہے کہ جنرل راحیل شریف کو خیبرایجنسی میں جاری کارروائیوں کے بارے میں بتایا گیا ہے۔انھوں نے فوجی جوانوں کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں پرانھیں خراجِ تحسین پیش کیا ہے۔

آرمی چیف نے اس موقع پر کہا کہ ''پوری قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مسلح افواج کے ساتھ ہے اور ہم ہر قسم کے دشمنوں کو خواہ وہ ملکی ہوں یا غیر ملکی، شکست سے دوچار کریں گے''۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان کے دشمنوں کی کسی بھی منظم سرگرمی کے مقابلے کے لیے پوری قوم کو متحد رہنا چاہیے۔ آرمی چیف نے دہشت گردوں کو سرحد پر کمین گاہیں بنانے اور پاکستان میں دراندازی سے روکنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

جنرل راحیل شریف نے عیدالاضحیٰ سے ایک روز قبل مقبوضہ اور آزاد جموں وکشمیر کے درمیان واقع حد متارکہ جنگ (لائن آف کنٹرول) کا دورہ کیا تھا۔ اس موقع پر انھوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزیاں دراصل پاکستان کا دہشت گردی کے خلاف جنگ سے رُخ موڑنے کی ناکام کوششوں کا شاخسانہ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان آرمی ملک کے انچ انچ کا دفاع کرنےکی صلاحیت رکھتی ہے۔

جنرل راحیل شریف نے جنگی کارروائیوں میں شریک فوجیوں کے ساتھ عیدین منانے کی نئی روایت قائم کی ہے۔ انھوں نے اس سے پہلے وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں شریک فوجی جوانوں کے ساتھ عیدیں گزاری تھیں اور یہ پہلا موقع تھا کہ وہ کنٹرول لائن پر گئے تھے۔