.

ماتمی جلوس کے قریب دھماکا، 5 بچوں سمیت 20 جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے صوبہ سندھ کے شہر جیکب آباد میں نویں محرم کے ماتمی جلوس کے موقعے پر ایک زوردار دھماکا ہوا ہے جس میں پولیس ذرائع کے مطابق 05 بچوں سمیت 20 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے۔ گورنر سندھ نے آئی جی سے واقعے کی رپورٹ طلب کر لی۔

کوئٹہ روڈ پر لاشاری محلہ کے ماتمی جلوس میں ذوردار دھماکا سے سترہ افراد جاں بحق اور بچوں سمیت متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ شیر شاہ چوک کے محلہ مرتضیٰ شاہ میں رات پونے آٹھ بجے اس وقت کہرام مچ گیا جب ایک جلوس کے قریب خوفناک دھماکا ہوا جس سے ہر طرف افراتفری اور چیخ پکار مچ گئی۔ دھماکے کے بعد پولیس اور امدادی ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں۔ پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کر دیا۔ امدادی ٹیموں نے زخمیوں کو ہسپتال منتقل کرنا شروع کر دیا۔

دھماکے کے نتیجے میں 5 بچوں سمیت 20 افراد جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہو گئے۔ زخمیوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں جن میں سے بعض کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔ دھماکے کے بعد جلوس میں بھگدڑ مچ گئی۔ جس کے بعد ریسکیو حکام کو زخمیوں کو اسپتال منتقل کرنے میں دشواری کاسامنا ہے۔

پولیس حکام کے مطابق زخمی ہونے والوں میں 23 بچے بھی شامل ہیں۔ شہر کے تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے، پولیس کے مطابق دھماکا خودکش تھا۔

دھماکے کی مذمت

پاکستان کے صدر ممنون حسین، وزیر اعظم نواز شریف، چیئرمین تحریک انصاف عمران خان، امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق، وزیر اعلی پنجاب، وزیر اعلی سندھ اور دیگر سیاسی رہنماوں کی جانب سے اس دھماکے کی پر زور مذمت کی گئی ہے۔ وزیر اعظم نے اس دھماکے میں جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ سے ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔