.

امریکا، پاکستان کو 8 ایف – 16 طیارے فروخت کرے گا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی انتظامیہ نے پاکستان کو 8 ایف – 16 طیارے فروخت کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ واضح رہے کہ 70 کروڑ ڈالر کی اس ڈیل کے لیے کانگریس کی منظوری ابھی باقی ہے جس کے بعد اس پر عمل درامد ہوسکے گا۔

ان آٹھ جنگی طیاروں کے علاوہ ڈیل میں پاکستان کو 14 عدد (helmet-mounted display HMD) کی فراہمی، تربیتی آپریشنز اور لاجسٹک سپورٹ بھی شامل ہے ۔

فوجی معاہدوں کی ذمہ دار وفاقی ایجنسی کے مطابق اس ڈیل کی مجموعی رقم 69 کروڑ 90 لاکھ 40 ہزار ڈالر ہے۔

ایجنسی نے مزید بتایا کہ " یہ ڈیل امریکا کی خارجہ پالیسی کے مقاصد حاصل کرنے اور قومی سلامتی کو یقینی بنانے کا حصہ بنے گی کیوں کہ اس کے ذریعے جنوبی ایشیا میں ایک اسٹریٹجک پارٹنر کے امن واستحکام میں بہتری لانے میں معاونت ہوگی اور اس سے پاکستان کو موجودہ اور مستقبل میں درپیش سیکورٹی خطرات کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ ہوگا"۔

ایجنسی کے مطابق یہ ہتھیار اور سازوسامان پاکستان کو "انسداد دہشت گردی اور بغاوت کو کچلنے کی کاررائیوں پر عمل درامد" کا موقع فراہم کریں گے، اور اس دوران خطے میں فوجی طاقت کا توازن بھی نہیں بگڑے گا۔

امریکی صدر باراک اوباما نے جنوری کے اواخر میں پاکستان پر زور دیا تھا کہ وہ انتہا پسند نیٹ ورکس کے خلاف "سنجیدگی" کا مظاہرہ کرے۔

اوباما کی جانب سے یہ بیان شمال مغربی پاکستان کی ایک یونی ورسٹی پر حملے کے بعد سامنے آیا۔ اس کارروائی میں جس کی ذمہ داری تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی تھی 21 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔ یہ واقعہ پشاور میں آرمی پبلک اسکول میں ہونے والی قتل وغارت گری کے ایک سال بعد پیش آیا جس میں 150 سے زیادہ بچے اور بڑے جاں بحق ہوگئے تھے۔

اوباما کے نزدیک شدت پسند نیٹ ورک اور تنظیموں کے خلاف پاک فوج کی کارروائی "مناسب پالیسی" ہے تاہم پاکستان "اس کی صلاحیت رکھتا ہے اور اس پر لازم ہے کہ وہ مزید بڑے اقدامات کرے"۔