.

سلمان تاثیر کا بیٹا چار برس بعد بلوچستان سے بازیاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے سابق مقتول گورنر سلمان تاثیر کے یرغمال بیٹے شہباز تاثیر کو کوئٹہ کے قریب کچلاک کے علاقے سے بازیاب کر لیا گیا ہے۔ شہباز تاثیر کو تقریباً ساڑھے چار سال کے بعد بازیاب کروایا گیا۔

پاکستان ٹیلی ویثن کے مطابق پاکستانی فوج نے کہا ہے کہ خفیہ اداروں نے شہباز تاثیر کو بلوچستان کے علاقے کچلاک سے بازیاب کرایا۔فوج کا کہنا ہے کہ اس کارروائی کی مزید تفصیلات جلد جاری کی جائیں گی۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ’آئی ایس پی آر‘ کی طرف سے جاری ایک مختصر بیان میں بتایا گیا کہ انٹیلی جنس ایجنسیوں نے بلوچستان کے علاقے کچلاک سے شہباز تاثیر کو بازیاب کروایا۔

شہباز تاثیر کو 26 اگست 2011ء میں لاہور سے نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا تھا اور بعد ازاں یہ خبریں موصول ہوتی رہیں کہ وہ طالبان کی تحویل میں ہیں۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے بیٹے علی حیدر گیلانی کو بھی 2013ء میں اغوا کیا گیا تھا جنہیں تاحال بازیاب نہیں کروایا جا سکا ہے۔