یوسف رضا گیلانی کا بیٹا تین سال بعد افغانستان سے بازیاب

علی حیدر گیلانی کو افغانستان کے شہر غزنی میں آپریشن کے دوران رہائی ملی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے سینئر رہنما اور سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کےتین سال قبل اغواء ہونے والے بیٹے علی حیدر گیلانی کو افغانستان سے بازیاب کروا لیا گیا۔علی حیدر گیلانی کی بازیابی کی تصدیق پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ایک ٹویٹر پیغام کے ذریعے کی۔

بلاول بھٹو زرداری نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ علی حیدر گیلانی کی بازیابی کے حوالے سے یوسف رضا گیلانی کو افغانستان کے سفیر کی ٹیلی فون کال موصول ہوئی، جس میں یوسف گیلانی کو بتایا گیا کہ ان کے بیٹے کو کامیاب آپریشن کے بعد بازیاب کروایا گیا۔ یوسف رضا گیلانی کو جس وقت بیٹے کی بازیابی کی اطلاع ملی اس وقت وہ کشمیر میں پیپلز پارٹی کے جلسے میں شریک تھے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان سیکیورٹی فورسز نے افغانستان کے صوبہ غزنی میں طالبان کے خلاف آپریشن کیا۔

دفترخارجہ نے بھی علی حیدر گیلانی کی بازیابی کی تصدیق کی۔ دفتر خارجہ سے جاری بیان کے مطابق افغانستان کے قومی سلامتی کے مشیر محمد حنیف اتمر نے پاکستانی ہم منصب سرتاج عزیز کو ٹیلی فون کرکے علی حیدر گیلانی کی بازیابی کی تصدیق کی۔حنیف اتمر نے بتایا کہ علی حیدرگیلانی کو افغان اور امریکی فورسز کے مشترکہ آپریشن کے ذریعے بازیاب کروایا گیا۔

مشیر افغان قومی سلامتی نے یہ بھی بتایا کہ علی حیدر گیلانی افغانستان سیکیورٹی فورسز کے پاس ہیں، جنھیں پاکستان بھجوانے کے انتظامات کیے جا رہے ہیں۔

یاد رہے کہ علی حیدر گیلانی کو 9 مئی 2013 کو عام انتخابات سے 2 روز قبل ملتان سے اغواء کیا گیا تھا، فائرنگ کے نتیجے میں علی حیدر گیلانی کے ذاتی سیکریٹری محی الدین سمیت 2 افراد ہلاک ہوئے تھے، وہ پنجاب اسمبلی کی نشست پی پی 200 سے پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ رہے تھے، علی حیدر گیلانی جلسے سے خطاب کر رہے تھے کہ اسی دوران نامعلوم افراد کی جانب سے جلسے میں فائرنگ کی گئی جس کے بعد وہ لاپتہ ہوگئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں