12 سخت گیر دہشت گردوں کو پھانسی دینے کی منظوری

سکیورٹی فورسز اور شہریوں پر حملوں میں ملوّث دہشت گردوں کا تعلق ٹی ٹی پی اور لشکر جھنگوی سے ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان آرمی کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے بارہ سخت گیر دہشت گردوں کو تختہ دار پر لٹکانے کی منظوری دے دی ہے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جمعرات کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ان مجرموں کو فوجی عدالتوں نے دہشت گردی کے مقدمات میں قصور وار قرار دے کر پھانسی کی سزائیں سنائی ہیں۔

یہ تمام سزایافتہ مجرمان دہشت گردی سے متعلق سنگین جرائم میں ملوّث رہے تھے۔انھوں نے شہریوں کو قتل کیا تھا،مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں پر حملے کیے تھے اور اسکولوں اور مواصلاتی ڈھانچے کو تباہ کیا تھا۔ان مجرموں کی تفصیل یہ ہے:

1۔محمد قیوم باچا۔اس مجرم کا کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سے تعلق تھا اور وہ افسروں اور فوجیوں کو ذبح کرنے ایسے سنگین جرم میں ملوّث تھا۔

2،3،4۔ محمد آصف ،شہادت حسین اور یاسین۔ان تینوں مجرموں کا کالعدم گروپ لشکر جھنگوی سے تعلق تھا۔یہ تینوں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں پر حملوں میں ملوّث تھے اور ان کے نتیجے شہریوں کی بھی اموات ہوئی تھیں۔

5،6،7۔ محمد طیب ،محمد ایاز اور سید اکبر۔ان تینوں مجرموں کا کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے تعلق تھا۔وہ مسلح افواج پر حملوں میں ملوّث تھے جس کے نتیجے میں فوجیوں اور شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔

8۔برکت علی ۔اس مجرم کا بھی ٹی ٹی پی سے تعلق تھا۔وہ شہریوں کی ہلاکت میں ملوّث تھا اور اس کے قبضے سے آتشیں ہتھیار اور دھماکا خیز مواد بھی برآمد ہوا تھا۔

9،10۔ عزیزالرحمان اور حسن ڈار ۔ٹی ٹی پی سے تعلق رکھنے والے یہ دونوں مجرم قانون نافذ کرنے والے اداروں پر حملوں میں ملوّث تھے جس کے نتیجے میں پولیس کانسٹیبلوں اور عام شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔

11۔ اسحاق ۔ٹی ٹی پی سے تعلق رکھنے والا یہ مجرم پاکستان کی مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اداروں پر حملوں میں ملوّث تھا۔اس کے ایک حملے میں ایک جونئیر کمیشنڈ افسر شہید اور ایک پولیس کانسٹیبل زخمی ہوگیا تھا۔

12۔ بہرام شیر ۔ اس مجرم کا بھی ٹی ٹی پی سے تعلق تھا۔یہ پاکستان کی مسلح افواج پر حملوں اور لڑکیوں کے ایک پرائمری اسکول کو بم سے اڑانے کے واقعے میں ملوث تھا۔اس بم حملے میں متعدد فوجی شہید اور زخمی ہوئے تھے۔

ان تمام مجرموں نے مجسٹریٹ اور ٹرائل عدالت کے روبرو اپنے جرائم کا اقرار کیا تھا اور فوجی عدالتوں نے حال ہی میں انھیں پھانسی کی سزائیں سنائی ہیں۔ جنرل راحیل شریف کی منظوری کے بعد اب انھیں جلد تختہ دار پر لٹکا دیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں