.

''پاکستان اور سعودی عرب ہر مشکل گھڑی میں ایک دوسرے کے ساتھ رہیں گے''

پوری دنیا کے مسلمان الحرمین الشریفین کے تقدس کے لیے تن، من اور دھن قربان کرنے کو تیار ہیں:ڈپٹی چیئرمین سینیٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کی پارلیمان کے ایوان بالا سینیٹ کے ڈپٹی چئیرمین مولانا عبد الغفور حیدری نے واضح کیا ہے کہ پاکستان اور سعودی عرب ماضی میں ہر مشکل گھڑی میں ایک ساتھ رہے ہیں اور وہ مستقبل میں بھی ایک دوسرے کے شانہ بشانہ رہیں گے۔

انھوں نے یہ بات رابطہ عالم اسلامی کے پاکستان میں ڈائریکٹر ڈاکٹر عبده بن محمد إبراهيم عتين سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔ انھوں نے پارلیمینٹ ہاؤس میں سوموار کے روز ڈپٹی چیئرمین سے ملاقات کی۔ مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ پاکستان سمیت پوری دنیا کے مسلمان الحرمین الشریفین کے تقدس اور تحفظ کے لیے خون کا آخری قطرہ بہا دیں گے۔

انھوں نے سعودی عرب میں دہشت گردی کے حالیہ واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف ایک بڑی جنگ لڑی ہے اور بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھایا ہے۔آج بھی پاکستانی عوام اس دہشت گردی کا حوصلے اور ہمت سے مقابلہ کر رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان ایک ابدی روحانی رشتہ قائم ہے اور یہ قیامت تک برقرار رہے گا۔

اس موقع پر ڈاکٹر عبدہ محمد عتین نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے پاکستانی عوام کی جانب سے سعودی عرب میں گذشتہ مہینوں کے دوران میں دہشت گردی کے واقعات کی شدید مذمت پر دل کی گہرائیوں سے شکریہ ادا کیا اورکہا کہ سعودی عوام اسلامی جمہوریہ پاکستان کو اپنا دوسرا گھر تصور کرتے ہیں اور پاکستان کی مسلح افواج کو پورے عالم اسلام کی طاقت تصور کرتے ہیں۔

انھوں نے سعودی عرب کی جانب سے پاکستانی عوام کے ساتھ ہرقسم کا مالی اور اخلاقی تعاون جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ قحط سالی ہو یا سیلاب کی تباہ کاریاں،ہم ہر مشکل گھڑی میں ایک دوسرے کی مدد کرتے رہیں گے۔