افغان طالبان نے پاکستانی ہیلی کاپٹر کے عملہ کو رہا کردیا

عملے کے پانچ پاکستانی ارکان اور ایک روسی انجنیئر کی رہائی کے بعد اسلام آباد آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

افغان طالبان نے صوبے لوگر میں پاکستان کے صوبہ پنجاب کی حکومت کے ملکیتی ایک ہیلی کاپٹر کے حادثے کے بعد پکڑے گئے عملہ کے چھے ارکان کو رہا کردیا ہے اور وہ اسلام آباد پہنچ گئے ہیں۔

پاکستان کے دفتر کے ترجمان نفیس زکریا نے ہفتے کے روز ایک بیان میں ان کی رہائی اور اسلام آباد آمد کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ وہ سب صحت مند اور تندرست ہیں۔

اطلاعات کے مطابق ہیلی کاپٹر کے عملے میں شامل پانچ پاکستانیوں اور ایک روسی انجنیئر کی رہائی افغانستان کے مشرقی صوبے لوگر کے مقامی قبائلی عمائدین کی کاوشوں کے نتیجے میں عمل میں آئی ہے اور افغان طالبان نے جمعے کے روز انھیں اورکزئی ایجنسی کے سرحدی علاقے میں پاکستانی قبائلی زعماء کے حوالے کیا تھا۔

پنجاب حکومت کے ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر نے 4 اگست کو صوبے لوگر میں فنی خرابی پیدا ہونے کے بعد ہنگامی لینڈنگ کی تھی۔بعض اطلاعات کے مطابق طالبان مزاحمت کاروں نے ہیلی کاپٹر کو گرنے کے بعد آگ لگا دی تھی اور عملے کو یرغمال بنا لیا تھا۔یہ ہیلی کاپٹر مرمت کے لیے پاکستان کے شمال مغربی شہر پشاور سے ازبکستان لے جایا جارہا تھا۔اس میں ایک روسی انجنیئر سمیت عملے کے چھے ارکان سوار تھے۔

پاکستانی اور روسی حکومت نے یرغمالیوں کی بازیابی کے لیے سفارتی سطح پر کوششیں کی ہیں۔افغان حکومت نے بھی انھیں یرغمال بنانے والوں کی شناخت کے لیے ایک آپریشن کا آغاز کیا تھا۔دفتر خارجہ نے گذشتہ ہفتے ایک بیان میں کہا تھا کہ افغان حکومت صوبہ لوگر کے ضلع عذرا کے مقامی قبائلی عمائدین کے ذریعے ہیلی کاپٹر کے عملے کی رہائی کے لیے کوشاں ہے۔

ہیلی کاپٹر کی تباہی کے فوری بعد آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے افغانستان میں امریکا کی قیادت میں نیٹو کے امدادی مشن کے کمانڈر جنرل نکلسن سے رابطہ کیا تھا اور ان سے عملے کی محفوظ اور جلد بازیابی میں مدد کے لیے کہا تھا۔انھوں نے اس سلسلے میں افغان صدر اشرف غنی سے بھی رابطہ کیا تھا۔

قبل ازیں لوگر کے بعض مقامی عہدے داروں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔صوبائی کونسل کے سربراہ ڈاکٹر عبدالوکیل ،نائب گورنر محمد ہاشم فیضی ،صوبے عذرا کے ضلعی گورنر حمیداللہ حامد نے میڈیا کے ساتھ انٹرویوز میں کہا تھا کہ ہیلی کاپٹر کے عملے کو طالبان نے یرغمال بنا رکھا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں