پشاور: ورسک ڈیم کے قریب مسیحی کالونی پر دہشت گردوں کا حملہ ناکام

پاک فوج نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے چاروں دہشت گرد ہلاک کردئیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نامعلوم مسلح دہشت گردوں نے پاکستان کے شمال مغربی صوبے خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور کے نواح میں واقع ورسک ڈیم کے قریب مسیحی برادری کی ایک کالونی پر حملہ کردیا مگر پاکستانی فوج کی بروقت جوابی کارروائی میں چاروں شدت پسند ہلاک ہوگئے۔

دہشت گرد جمعہ کو علی الصباح پشاور نواح میں واقع رہائشی علاقے کے عقب سے داخل ہوئے۔ حملے کے نتیجے میں اب تک ایک شہری کی ہلاکت کی اطلاع بھی سامنے آئی ہے۔

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے ترجمان لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے ایک سماجی رابطے کی ویب سائٹ "ٹویٹر" پر بتایا ہے کہ مسیحی کالونی پر حملہ کے بعد سکیورٹی فورسز نے بروقت کارروائی کی اور ’چاروں خودکش حملہ آور مارے گئے ہیں، علاقے میں تلاشی کا عمل جاری ہے۔‘

آئی ایس پی آر کے مطابق حملہ آور صبح 5:50 کے قریب اسلحے اور گولہ بارود کے ہمراہ کرسچن کالونی میں داخل ہوئے اور پہلے سکیورٹی گارڈ کو نشانہ بنایا۔ حملے کے فوراً بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور فائرنگ کے تبادلے میں حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا۔

اس حملے کے فورا بعد پشاور کے مقامی ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور ہسپتالوں کی سیکیورٹی میں بھی اضافہ کردیا گیا۔ اس سے پہلے پاکستان کے رقبے کے لحاظ سے سب سے بڑے صوبے بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں بلوچستان بار کے صدر بلال انور کاسی کے قتل کے بعد ہسپتال میں جمع وکلاء اور دیگر افراد پر حملہ کردیا گیا تھا جس کے نتیجے میں 70 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں