فلسطینی صدر محمود عباس کی سوموار کو پاکستان کے دورے پرآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی صدر محمود عباس سوموار کو پاکستان کے تین روزہ سرکاری دورے پر اسلام آباد پہنچ رہے ہیں۔

پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے ان کے دورے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ سترہ رکنی وفد ان کے ہمراہ ہوگا،ان میں پانچ وزراء بھی شامل ہوں گے۔فلسطینی اتھارٹی کا صدر بننے کے بعد محمود عباس کا پاکستان کا یہ تیسرا دورہ ہوگا۔اس سے پہلے وہ 2005ء اور 2013ء میں پاکستان کا دورہ کرچکے ہیں۔

صدر محمود عباس اسلام آباد میں قیام کے دوران میں وزیراعظم میاں نواز شریف سے ون آن ون ملاقات کریں گے اور اس کے بعد وفود کی سطح پر بات چیت ہوگی۔

توقع ہے کہ دونوں لیڈر اسلام آباد کے علاقے ڈپلومیٹک انکلیو میں واقع فلسطینی سفارت خانے کی نو تعمیر شدہ عمارت کا مشترکہ طور پر افتتاح کریں گے۔

فلسطینی صدر اور ان کا وفد صدر ممنون حسین سے بھی ملاقات کریں گے اور وہ دو طرفہ سیاسی تعلقات کے علاوہ مشترکہ مفاد سے متعلق دوسرے امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔

واضح رہے کہ حکومتِ پاکستان نے 1992ء میں ڈپلومیٹک انکلیو میں فلسطینی سفارت خانے کی عمارت کی تعمیر کے لیے پلاٹ تحفے میں دیا تھا اور بعد میں 2013ء میں عمارت کی تعمیر میں بھی مالی معاونت کی ہے۔

پاکستان ابتدا ہی سے فلسطینی نصب العین کی بھرپور حمایت کرتا چلا آرہا ہے اور اس نے ہمیشہ بین الاقوامی فورموں پر 1967ء کی جنگ سے قبل فلسطینی علاقوں کی سرحدوں کے اندر ایک آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کی حمایت کی ہے جس کا دارالحکومت بیت المقدس ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں