لاہور : فیروز پور روڈ پر خود کش بم دھماکا ، 26 افراد جاں بحق

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے پرانی سبزی منڈی کی جگہ پر بم حملے کی ذمے داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان کے دوسرے بڑے شہر لاہور میں فیروزپور روڈ پر واقع ارفع کریم آئی ٹی ٹاور کے نزدیک سوموار کی سہ پہر ایک خودکش بم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں نو پولیس اہلکاروں سمیت چھبیس افراد جاں بحق اور کم سے کم ساٹھ زخمی ہوگئے ہیں۔

لاہور کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے بتایا ہے کہ بم دھماکا تین بج کر پچپن منٹ پر ہوا تھا۔یہ ایک خودکش حملہ تھا اور اس میں پولیس اہلکاروں کو ہدف بنایا گیا تھا۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) نے اس خود کش بم حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے اور کہا ہے کہ اس کے ایک خودکش بمبار نے موٹر سائیکل پر نصب بم کے ذریعے پولیس اہلکاروں پر حملہ کیا تھا۔

پنجاب کے محکمہ انسداد دہشت گردی کے ترجمان نے بم دھماکے میں نو پولیس اہلکاروں کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی ہے۔ اٹھاون زخمیوں میں چھے پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ ریسکیو 1122 کی ٹیموں نے زخمیوں کو نزدیک واقع اسپتالوں میں منتقل کردیا ہے اور وہاں ایمرجنسی لگا دی گئی ہے۔

پنجاب حکومت کے ترجمان ملک محمد احمد نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ فیروز روڈ پر واقع کوٹ لکھپت کے علاقے میں پرانی سبزی منڈی کی جگہ پر تجاوزات کے خلاف مہم جاری تھی اور کسی ناخوش گوار واقعے سے بچنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری وہاں موجود تھی۔اس دوران وہاں ایک حملہ آور بمبار نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا ہے۔ یہ ایک مصروف علاقہ ہے اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کے دفاتر بھی اس کے نزدیک ہی واقع ہیں۔

پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بم دھماکے کی جگہ کا گھیراؤ کر لیا ہےاور فورینزک ٹیموں نے بھی وہاں سے شواہد اکٹھے کر لیے ہیں۔حکام کا کہنا ہے کہ ان کی تحقیقات کے بعد ہی بم دھماکے کی نوعیت کا پتا چل سکے گا۔بم دھماکے کے بعد لاہور شہر میں سکیورٹی مزید سخت کردی گئی ہے۔

وزیراعظم میاں نواز شریف ، وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف اور دوسرے لیڈروں نے لاہور میں اس بم دھماکے کی شدید مذمت کی ہے اور اس میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر متاثرہ خاندانوں سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

پاکستان آرمی کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے بھی اس بم دھماکے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے غم زدہ خاندانوں سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آٗئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل ،میجر جنرل آصف غفور نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ آرمی چیف نے امدادی سرگرمیوں میں مقامی انتظامیہ کی معاونت کی ہدایت کی ہے اور فوجی دستے بم دھماکے کی جگہ پر پہنچ گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں