.

پاکستان کے نئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی حلف برداری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے نئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

نومنتخب وزیراعظم کی حلف برداری کی تقریب منگل کی شام ایوان صدر اسلام آباد میں منعقد ہوئی جہاں صدر ممنون حسین نے ان سے ان کے عہدے کا حلف لیا۔

قبل ازیں حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کے نامزد امیدوار شاہد خاقان عباسی بھاری اکثریت سے ملک کے نئے وزیراعظم منتخب ہوئے تھے۔پارلیمان کے ایوان زیریں قومی اسمبلی کے کل 342 ارکان میں سے 221 نے ان کے حق میں ووٹ دیا ہے اور ان کے مدمقابل تینوں امیدوار مجموعی طور پر ان کے حاصل کردہ ووٹوں سے نصف ووٹ بھی نہیں لے سکے ہیں۔

عدالتِ عظمیٰ نے گذشتہ جمعہ کو پاناما پیپرز کیس کے مقدمے میں میاں نواز شریف کو نااہل قرار دے دیا تھا۔ انھوں نے اپنی سبکدوشی کے بعد شاہد خاقان عباسی کو حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کا وزارت عظمیٰ کا امیدوار نامزد کیا تھا۔

قومی اسمبلی میں حزب اختلاف کی جماعتیں شاہد خاقان عباسی کے مد مقابل اپنا مشترکہ امیدوار لانے میں ناکام رہی تھیں اور حزب اختلاف کی بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی نے سید نوید قمر ،پاکستان تحریک انصاف نے عوامی مسلم لیگ کے شیخ رشید احمد اور جماعت اسلامی نے صاحبزادہ طارق اللہ کو وزارت عظمیٰ کے انتخاب کے لیے میدان میں اتارا تھا۔

اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے نئے قائد ایوان کے انتخاب کے عمل کی نگرانی کی اور حکومتی اور حزب اختلاف کے ارکان نے اپنا اپنا حق رائے دہی استعمال کیا اور ووٹنگ کا عمل مکمل ہونے کے بعد اسپیکر نے نتائج کا اعلان کیا۔اس کے مطابق پیپلز پارٹی کے امیدوار سید نوید قمر نے سینتالیس ، شیخ رشید احمد نے تینتیس اور صاحب زادہ طارق اللہ نے صرف چار ووٹ حاصل کیے۔

شاہد خاقان عباسی نے اپنی کامیابی کے بعد قومی اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے اپنی نامزدگی پر سبکدوش وزیراعظم میاں نواز شریف ، مسلم لیگ کی پارلیمانی پارٹی ،اس کی حلیف جماعتوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ جمہوری عمل سبوتاژ نہیں ہوا ہے اور ایک مرتبہ پھر پٹڑی پر رواں دواں ہوگیا ہے۔انھوں نے کہ ان کی جماعت نے تحفظات کے باوجود عدالتِ عظمیٰ کے فیصلے کو تسلیم کیا ہے۔

انھوں نے اپنی ترجیحات کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں عام شہریوں کو خود کار ہتھیاروں کے اسلحہ لائسنس جاری نہیں کیے جانے چاہییں۔اگر کابینہ نے اس کی منظوری دی تو خودکار ہتھیاروں کے لائسنس منسوخ کردیے جائیں گے اور شہریوں سے اسلحہ لے کر انھیں رقوم دی جائیں گی۔

اس کے علاوہ انھوں نے تعلیم اور صحت کے شعبوں میں اصلاحات اور بالخصوص معیار تعلیم کو بہتر بنانے ،زراعت کے شعبہ پر مزید توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیا۔

واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ نواز کے فیصلے کے مطابق شاہد خاقان عباسی پینتالیس روز کے لیے وزیراعظم رہیں گے۔اس دوران میں میاں نواز شریف کے چھوٹے بھائی اور وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 سے انتخاب لڑیں گے۔ یہ نشست میاں نواز شریف کی نااہلی کے بعد خالی ہوئی ہے۔الیکشن کمیشن نے اس نشست پر 17 ستمبر کو پولنگ کرانے کے لیے شیڈول کا اعلان کر دیا ہے۔