.

یوم سیاہ: پاک فوج نے ایل و سی پر بھارتی جاسوس طیارہ مار گرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستانی فوج نے وفاق کے زیر انتظام آزاد کشمیر کے علاقے میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے قریب بھارتی جاسوس ڈرون کو مار گرایا۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور کی جانب سے ٹویٹر پر میں جاری پیغام کے مطابق 'پاک فوج کی جانب سے ایل او سی میں رکھ چکری سیکٹر میں جاسوسی کرنے والے بھارتی ڈرون کو مار گرایا گیا'۔ آئی ایس پی آر کے مطابق تباہ شدہ بھارتی جاسوس ڈرون کا ملبہ پاک فوج نے قبضے میں لے لیا ہے۔

بھارتی کشمیر پر قبضے کے خلاف یوم سیاہ

خیال رہے کہ سرحد کی دونوں جانب تمام کشمیری بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ منا رہے ہیں اور اس سلسلے میں مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال کی گئی۔ آزاد کشمیر سمیت پاکستان میں بھی بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف یوم سیاہ منایا گیا اور بڑے شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔

سرحد پار سے تعلق رکھنے والی کشمیری جماعتوں کے اتحاد کُل جماعتی حریت کانفرنس کے تحت اسلام آباد میں دفتر خارجہ کے باہر مظاہرہ کیا گیا، اس موقع پر آزادی کے متوالوں نے بھارتی تسلط کے خلاف جدوجہد جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔

ایوان بالا میں بھارتی مظالم کے خلاف قرارداد

پارلیمنٹ کے ایوان بالا [سینیٹ] نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی فوج کے مظالم کے خلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور کی۔ چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کی زیر صدارت ایوان بالا میں کارروائی کا آغاز ہوا تو اس دوران کشمیر میں جاری مظالم پر بحث کی گئی۔

اس موقع پر رضا ربانی نے کہا کہ اقوام متحدہ انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے کیسے اپنا کردار ادا کرے گا وہ تو خود انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث ہے۔

سینیٹ ارکان نے بین الاقوامی برادری اور اقوام متحدہ کو کشمیری عوام کے بہتے خون کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کہا کہ بین اقوامی برادری اور اقوام متحدہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث ہے۔

ارکان سینیٹ نے کہا کہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں جاری ہیں اور دنیا میں سب سے زیادہ بھارت کی جانب سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں۔

ایل او سی پر فائرنگ

خیال رہے کہ بھارتی فوج کی جانب سے ایل او سی میں بلااشتعال فائرنگ کا سلسلہ طویل عرصے سے جاری ہے اور شہری آبادی کو بھی نشانہ بنایا جا رہا جس کے باعث ہلاکتوں میں بھی مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔

رواں ہفتے آزاد جموں وکشمیر کے قیام کے 70 سالہ جشن کے دوران بھی بھارتی فوج کی جانب سے شیلنگ کی گئی تھی جس کے نتیجے میں 2 خواتین جاں بحق اور 5 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

جہلم ویلی کے ڈپٹی کمشنر عبدالحمید کیانی کا کہنا تھا کہ شیلنگ کا تازہ واقعہ وادی لیپا میں دوپہر کو پیش آیا تھا جب بھارتی فوجیوں نے بھاری اسلحہ استعمال کیا جس کے نتیجے میں ہلاکتیں ہوئیں۔