.

آرمی چیف کی وزیراعظم کو تجویز،’ دھرنے سے پرامن طریقے سے نمٹا جائے‘

اسلام آباد آپریشن کی خبر سنتے ہی پرتشدد احتجاج کا دائرہ پورے ملک میں پھیل گیا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے وزیراعظم شاہد خاقان کو ٹیلی فون کیا ہے جس میں انہوں نے اسلام آباد دھرنے کے معاملے کو پر امن انداز سے حل کرنے کی تجویز دی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے وزیراعظم شاہد خاقان کو ٹیلی فون کیا ہے جس میں انہوں نے اسلام آباد دھرنے کے معاملے کو پر امن انداز سے حل کرنے کی تجویز دی ہے۔

آرمی چیف نے وزیراعظم سے بات چیت میں کہا کہ دونوں جانب سے تشدد سے گریز کریں کیونکہ موجودہ صورتحال قومی مفاد اور اتحاد میں نہیں ہے۔آئی ایس پی آر کی جانب سے ٹوئٹر پر جاری کردہ پیغام کے مطابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے وزیراعظم کو ٹیلی فون کر کے اسلام آباد دھرنے میں کسی بھی تشدد سے بچنے اور اس سے پرامن طریقے سے نمٹنے کی تجویز دی ہے۔

ملک کے دوسرے شہروں میں احتجاج

درایں اثنا تحریک لبیک یا رسول اللہ کے کارکن پنجاب کے وسطی شہروں گوجرانوالہ، گجرات اور سیالکوٹ میں زبردستی دکانیں بند کروا رہے ہیں۔ میڈیا رپورٹس میں عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ مظاہرین نے ہاتھوں میں ڈنڈے اُٹھا رکھے ہیں اور انکار کرنے کی صورت میں دکانوں کو نقصان بھی پہنچا رہے ہیں۔ پولیس کے مطابق مظاہرین نے مختلف مقامات پر جی ٹی روڑ کو بلاک کر دیا ہے جس کی وجہ سے گوجرانوالہ اور اس کے قریبی علاقوں میں متعدد باراتیں بھی سڑکوں پر پھنس گئی ہیں۔

لاہور سے العربیہ کے مراسلہ نگار وقاص علی نے بتایا ہے کہ شاہدرہ پولیس سٹیشن پر مظاہرین نےدھاوا بول دیا جس کے بعد پولیس نے ان پر شیلنگ کی۔ مظاہرین لاہور شہر کے مختلف علاقوں میں پھیل گئے ہیں۔ مظاہرین نے ملتان روڈ اور ٹھوکر نیاز بیگ روڈ کو بھی بند کر دیا ہے۔ پنجاب اسمبلی کے سامنے چیئرنگ کراس روڈ پر مظاہرین کی بڑی تعداد موجود ہے۔