.

یمنی فریقوں کے درمیان امن مشاورت کا دوبارہ آغاز ہو گا: ولد الشیخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے ممالک کا ایک اجلاس پیر کے روز سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں منعقد ہو رہا ہے۔

یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی ولد الشیخ احمد نئے سیاسی مذاکرات میں شامل ہونے کے حوالے سے یمنی فریقوں کے جواب کا اعلان کر چکے ہیں۔ پیر کے روز انہوں نے تمام فریقوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس مرحلے کی کامیابی کو یقینی بنانے کے لیے پیشگی اقدامات کریں۔

اقوام متحدہ کے ایلچی نے الحدیدہ اور سالیف کی بندرگاہوں کا خیرمقدم کیا۔ انہوں نے تمام فریقوں پر زور دیا کہ وہ ان بندرگاہوں کو کھلا رکھنے کے لیے تعاون کریں تا کہ یمنی عوام کو مطلوب امداد اور سامان فراہم کیا جا سکے۔

ولد الشیخ نے سعودی عرب کی جانب سے یمنی کرنسی کی سپورٹ کے لیے یمن کے مرکزی بینک میں دو ارب ڈالر جمع کرائے جانے کے اقدام کو سراہا۔

ولد الشیخ نے تمام فریقوں سے مطالبہ کیا کہ وہ جذبہ خیر سگالی کے ساتھ سیاسی عمل میں مکمل طور پر داخل ہونے کے لیے سازگار حالات کو یقینی بنانے کے واسطے ضروری اقدامات کریں۔