.

پاکستان کی قومی فضائی کمپنی کے 49 فیصد حصص فروخت کرنے کا فیصلہ

وفاقی کابینہ نے پی آئی اے کی ری اسٹریکچرنگ کی منظوری دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کی قومی فضائی کمپنی "پی آئی اے" کے 49 فیصد حصص کی فروخت کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پی آئی اے کی ری اسٹریکچرنگ کی منظوری دے دی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پی آئی اے کا خسارہ سو ارب روپے سے بڑھ چکا ہے۔ پی آئی اے کی مجوزہ نجکاری پلان کے تحت 49 فیصد حصص فروخت کے لیے پیش کئے جائیں گے جبکہ 51 فی صد حصص حکومت کے پاس رہیں گے۔

وفاقی کابینہ نے ہدایت کی کہ موجودہ خسارہ کون برداشت کرے گا۔ اس کی جامع حکمت عملی تیار کی جائے۔ تاہم کابینہ نے ہدایت کی کہ پی آئی اے کا موجودہ خسارہ کون برداشت کرے گا حکومت یا حصص خریدنے والی کمپنی، اس بارے میں واضح حکمت عملی بنائی جائے۔

ذرائع کا کہنا ہےمجوزہ ری اسٹریکچر پلان کے تحت جہازوں اور فلائٹ آپریشنز کو الگ جبکہ ٹکٹنگ اور زمینی آپریشنز کو الگ رکھا جائے گا۔

وفاقی کابینہ نے کم عمر بچوں کو سگریٹ کی لت سے بچانے کے لیے کھلے سگریٹ کی فروخت پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اجلاس میں وزارت توانائی کی ملک میں بجلی کی طلب ورسد اور لوڈ مینجمنٹ پر بریفنگ دی گئی۔