.

ایران کے ساتھ تجارت، سرمایہ کاری اور اقتصادی تعاون بڑھانا چاہتے ہیں: شاہد خاقان عباسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ایران کے ساتھ تجارت ، سرمایہ کاری اور اقتصادی تعاون بڑھانا چاہتے ہیں 2021تک دو طرفہ تجارت 5ارب ڈالر تک لے جانے کے لیے ملکر کام کرنا ہو گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے وزیر اعظم ہاوس میں وزیر اعظم سے ملاقات کی۔

ملاقات میں خطے میں امن و سلامتی اور دو طرفہ تعلقات کی مضبوطی پر تبادلہ خیال کیا گیا وزیر اعظم نے علاقائی اقتصادی اشتراک کے لیے رابطوں کے فروغ کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان مشترکہ ترقی و خوشحالی کے لیے امن اور علاقائی رابطوں کے وژن پر عمل پیرا ہے وزیر اعظم نے گیس پائپ لائن منصوبے پر عملدرآمد سے متعلق امور کے حل کے عزم کا اعادہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ خطے کی خوشحالی کے لیے افغانستان میں امن و استحکام ضروری ہے افغانستان میں امن و استحکام کے لیے پاکستان اور ایران اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ وزیر اعظم نے کشمیریوں کا اصولی جدوجہد کی حمایت پر ایرانی قیادت کا شکریہ ادا کیا جبکہ ایرانی وزیر خارجہ نے اعلٰی سطح رابطوں کے فروغ کا خیر مقدم کیا اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام کے لیے سرحدی انتظام کو سراہا۔ جواد ظریف نے کہا کہ دونوں ملکوں کی مشترکہ کوششوں سے عوامی اور اقتصادی رابطوں کو فروغ ملا