.

شیری رحمان سینیٹ کی اپوزیشن لیڈر مقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چیئرمین سینیٹ میر صادق سنجرانی نے سابق وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پیپلزپارٹی کی نائب صدر شیری رحمان کو سینیٹ کی اپوزیشن لیڈر مقرر کر دیا ہے وہ ایوان بالا کی پہلی خاتون اپوزیشن لیڈر ہیں انہیں تین سیاسی و قوم پرست جماعتوں اور تمام آزاد اراکین کی حمایت حاصل رہی اس عہدہ کے لیے 33ارکان سینیٹ نے حمایت کی جبکہ مدمقابل پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار سینیٹر اعظم سواتی کو 19ارکان کی حمایت حاصل ہو سکی

سینیٹر اعظم سواتی کو بھی تین سیاسی و قوم پرست جماعتوں کی حمایت حاصل رہی جبکہ ڈپٹی چیئرمین کے عہدے کے لیے سابق امیدوار سینیٹر عثمان کاکڑ نے آزاد اپوزیشن کے بینچوں پر بیٹھنے کا اعلان کرتے ہوئے باضابطہ درخواست دے دی ہے.

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سینیٹر شیری رحمان کو اپوزیشن لیڈر مقرر کرنے کی ضابطہ کار کے تحت منظوری دے دی ہے باضابطہ اعلامیہ جاری کر دیا گیا ہے اور تقرر نامہ نئی قائد حزب اختلاف کے سپرد کر دیا گیا ہے تقرر نامہ وصول کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے رہنما قمر زمان کائرہ، چودھری منظور اور سینیٹر روبینہ خالد بھی نئے قائد حزب اختلاف کے ہمراہ تھیں شیری رحمان کو اس عہدہ کے لیے پاکستان پیپلز پارٹی ، بلوچستان اور فاٹا کے آزاد اراکین ، عوامی نیشنل پارٹی اور بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل) کے 33اراکین سینیٹ کی حمایت حاصل تھی جبکہ مد مقابل تحریک انصاف کے رہنما سینیٹر اعظم سواتی کو پاکستان تحریک انصاف ، ایم کیو ایم اور جماعت اسلامی کے 19اراکین کی حمایت حاصل تھی اور انہوں نے اس عہدہ کے لیے گزشتہ روز ہی درخواست جمع کروائی تھی سیکرٹری سینیٹ کی طرف سے دونوں درخواستیں باضابطہ طور پر چیئرمین سینیٹ کو پیش کی گئیں ضابطہ کار کے مطابق اپوزیشن کے اکثریتی ارکان کی حمایت رکھنے والی رہنما شیری رحمان کے حق میں فیصلہ جاری کر دیا گیا قوم پرست رہنما سینیٹر عثمان کاکڑ نے اپنی جماعت کے پانچ اراکین سینیٹ کو ایوان بالا میں اپوزیشن کی طرف نشستیں الاٹ کرنے کی باضابطہ درخواست دے دی ہے پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے رہنما کے مطابق وہ آزاد اپوزیشن کی حیثیت سے اپنا کردار ادا کریں گے.

یاد رہے کہ سابقہ سینیٹ میں پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے اراکین کو حکومتی سائیڈ پر نشستیں دی گئی تھیں پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے ارکان کی تعداد پانچ ہے اور گزشتہ روز اپوزیشن کی طرف بینچ الاٹ کرنے کے لیے عثمان کاکڑ نے درخواست دے دی ہے۔