.

سعودی عرب پر حوثی میزائل حملے ، پاکستان کی سخت مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان نے یمن میں حوثی باغیوں کی جانب سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی سخت مذمت کی ہے۔

اسلام آباد میں دفتر خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی حکومت اور عوام سعودی عرب کی علاقائی سلامتی اور حرمین شریفین کے خلاف خطرات کے مقابلے میں مملکت کی قیادت، حکومت اور عوام کے ساتھ کھڑے ہیں۔ بیان میں سعودی عرب کی جانب سے بیلسٹک میزائلوں کا حملہ ناکام بنائے جانے کو بھی سراہا گیا ہے۔

ادھر حافظ طاہر محمود اشرفی کی سربراہی میں پاکستان علماء کونسل نے اپنے ایک بیان میں دہشت گرد حوثی ملیشیا کی جانب سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی مذمت کی ہے۔ کونسل نے باور کرایا کہ پاکستان اس موقع پر سعودی عرب کی اراضی کے دفاع اور اس کے امن کو برقرار رکھنے کے واسطے مملکت کے شانہ بشانہ کھڑا ہے۔

اس موقع پر طاہر اشرفی نے عالمی برادری اور اسلامی ممالک سے اپیل کی ہے کہ وہ اسلامی ممالک کے معاملات میں ایران کی مداخلتوں کو روکیں۔ انہوں نے سعودی سکیورٹی فورسز کی کارکردگی، حوثیوں کے حملوں کو ناکام بنائے جانے اور حرمین شریفین کے امن اور سلامتی کو برقرار رکھے جانے کو بھرپور انداز سے سراہا۔

دوسری جانب یمن کی حکومت نے حوثی ملیشیا کی جانب سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائلوں کے داغے جانے کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ خطّے کے امن کے خلاف ایرانی خطرے کا مقابلہ کیا جائے۔ یمنی حکومت نے ایران اور اس کی آلہ کار حوثی ملیشیا کی اس مجرمانہ اور دہشت گرد کارروائی کی سخت مذمت کی۔ یمنی حکومت نے سلامتی کونسل اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ خطّے میں ایران کے توسیعی اور تخریبی منصوبے کے سامنے ایک ٹھوس اور فیصلہ کن موقف اپنائیں۔