.

بیساکھی میلہ سے قبول اسلام اور پھر شادی کا سفر سکھ بیوہ نے کیسے طے کیا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بیساکھی کے میلے میں شرکت کے لئے پاکستان آئی ہوئی 31 سالہ بھارتی بیوہ سکھ خاتون کرن بالا نے لاہور میں جامعہ نعیمیہ کے مہتمم علامہ راغب نعیمی کے ہاتھوں اسلام قبول کرلیا۔ اس کا اسلامی نام آمنہ بی بی رکھا گیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام قبول کرنے کے بعد آمنہ بی بی نے ہنجر وال لاہور کے ایک شخص محمد اعظم ولد خادم حسین سے اسلامی طریقے کے مطابق شادی کر لی ہے جب کہ شادی کے بعد وہ اپنے شوہر کے ساتھ دو روز سے لاپتا ہے۔ شادی کے بعد آمنہ بی بی نے اسلام آباد میں دفتر خارجہ کو درخواست دی ہے کہ اس کا ویزہ 21 اپریل کو ختم ہونے والا ہے لیکن اس کے اسلام قبول کرنے اور شادی کرنے کے بعد بھارت واپس جا کراس کو اپنی جان کاخطرہ ہے اس لئے وہ ان حالات میں بھارت واپس نہیں جانا چاہتی لہٰذا اس کے ویزے میں توسیع کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی پنجاب کے شہر ہوشیار پور کے محلہ گڑھ شنکر کے رہائشی آنجہانی نریندر سنگھ کی بیوہ اور منوہر لال اور سوما دیوی کی بیٹی کرن بالا نے بیساکھی کے میلے میں شرکت کے لئے پاکستان آنے کا ویزہ حاصل کیا اور جتھے کے ہمراہ 12 اپریل کو خصوصی ٹرین کے ذریعے لاہور پہنچی جہاں سے اس کو جتھے سمیت حسن ابدال روانہ کر دیا گیا۔ 15اپریل کو وہ جتھے سے الگ ہو کر لاہور چلی آئی جہاں سوشل میڈیا کے ذریعے بنے دوست محمد اعظم جو کہ سعودی عرب میں لیبر کی حیثیت سے کام کر رہا ہے اور وہ بھی اس ماہ کی 10 تاریخ کو ہی پاکستان پہنچا تھا، نے اسے ریلوے اسٹیشن سے لیا اور اپنے گھر واقع ہنجر وال لے گیا۔