.

خاشقجی کیس کی مشترکہ تحقیقات کا خیرمقدم کرتے ہیں: پاکستان

جب تک معاملے کی تحقیقات جاری ہیں، اس پر بات کرنا مناسب نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان نے ترکی کے شہر استنبول میں قائم سعودی قونصل خانے میں پراسرار طورپر لا پتاہونے والے صحافی جمال خاشقجی کے کیس کی ترکی اور سعودی عرب کی مشترکہ تحقیقات کا خیر مقدم کیا ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان محمد فیصل نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان صحافی کی گم شدگی کے کیس کی مشترکہ تحقیقات کا خیر مقدم کرتا ہے۔ انہوں‌نے کہا کہ ترکی اور سعودی عرب کا مل کر جمال خاشقجی کے معاملے کی تحقیقات کرنا مثبت قدم ہے اور اس حوالے سے پاکستان بھی دونوں برادر ملکوں کو ہرممکن تعاون فراہم کرنے کو تیار ہے۔

ترجمان نے کہا کہ جب تک معاملے تحقیقات جاری ہیں جمال خاشقجی کے حوالے سے کسی قسم کا رد عمل ظاہر کرنا مناسب نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے سعودی عرب اور ترکی دونوں کے ساتھ گہرے دوستانہ اور برادرانہ تعلقات قائم ہیں۔ ہم توقع رکھتے ہیں کہ ریاض اور انقرہ مل کر جمال خاشقجی کی گم شدگی کا حل نکالیں گے۔

خیال رہے کہ صحافی جمال خاشقجی 2 اکتوبر کو استنبول میں قائم سعودی عرب کے قونصل خانے میں گئے جس کے بعد سے انہیں نہیں دیکھا گیا۔ بعض حلقوں کا دعویٰ ہے کہ انہیں تشدد کرکے قتل کردیا گیا جبکہ سعودی عرب خاشقجی کو قتل کرنے کے الزامات کو سختی سے رد کرتا ہے۔