یومِ یک جہتی کشمیر: حقِ خود ارادیت کے حصول تک کشمیریوں کی حمایت کے عزم کا اعادہ

بھارت سیاسی قیدیوں کو رہا کرے ، کشمیریوں کے خلاف آتشیں ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی عاید کرے: عارف علوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

پاکستان ، آزاد جموں وکشمیر اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں نے منگل کے روز یوم یک جہتی کشمیر اس عزم کی تجدید کے ساتھ منایا ہے کہ بھارت کے زیر انتظام ریاست مقبو ضہ جموں و کشمیر کے باسیوں کی حق خود ارادیت کے حصول کے لیے جدوجہد کی ہر طرح سے حمایت جاری رکھی جائے گی۔

یومِ یک جہتی کشمیر کے موقع پر پاکستان کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں مختلف سیاسی اور دینی جماعتوں نے ریلیوں اور جلسے جلوسوں کا اہتمام کیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک بڑی تقریب ایوان صدر اسلام آباد میں منعقد ہوئی جس سے خطاب کرتے ہوئے صدر عارف علوی نے بھارت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کشمیری عوام کو ریاستی جبروتشدد کے ذریعے دبانے کے بجائے انھیں ان کا پیدائشی حق ، حقِ خود ارادیت دے اور ان کے بنیادی انسانی حقوق کا احترام کرے۔

انھوں نے مظفرآباد میں آزاد جموں وکشمیر کی قانون اسمبلی سے بھی خطاب کیا ہے اور بھارت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں تمام سیاسی قیدیوں کو رہا کرے ، کشمیریوں کے خلاف آتشیں ہتھیاروں اور پیلٹ بندوقوں کے استعمال پر پابندی عاید کرے۔ مقبوضہ کشمیر میں نافذ تمام کالے قوانین کو منسوخ کرے ، حرّیت پسند قیادت کو آزادانہ سفر کی اجازت دے ، بین الاقوامی اداروں کے مبصرین کو ریاست میں انسانی حقوق کی صورت حال کا جائزہ لینے کے لیے آنے کی اجازت دے اور برقی ابلاغیات اور سوشل میڈیا پر عاید قدغنیں ختم کرے۔

صدر عارف علوی نے ایوان صدر میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت نے کشمیریوں کی حقِ خودارادیت کے لیے جدوجہد کو خون رنگ کر دیا ہے لیکن اس کے تمام تر مظالم کے باوجودکشمیریوں کا جذبہ حرّیت بڑھا ہے اور بھارت خواہ جتنی بھی کوشش کرلے ، وہ کشمیریوں کی آواز کو نہیں دبا سکتا ۔

انھوں نے کہا کہ کشمیر تقسیم ہند کا نامکمل ایجنڈا ہے ، کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے۔ ہم آج بھی اپنے اصولی موقف پر قائم ہیں کہ اس دیرینہ تنازع کو اقوام متحدہ کی قرارداوں کے مطابق حل کیا جائے ۔ گذشتہ چند دہائیوں کے دوران میں مقبوضہ وادی میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں ہزاروں شہادتیں ہوئی ہیں ، بھارت مقبوضہ کشمیر پر تسلط قائم رکھنے کیلئے پیلٹ گنوں کو استعمال کررہا ہے ۔ بھارتی سیکورٹی فورسز معصوم کشمیریوں پر ظلم و بربریت کے پہاڑ توڑ رہی ہیں اور ہر دس کشمیریوں پر ایک بھارتی فوجی تعینات کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے گذشتہ 70 سال کے دوران میں ہمیشہ امن کے لیے ہاتھ آگے بڑھایا ہے ۔ پاکستان کی امن کی خواہش کو بھارت نے ہمیشہ مسترد کیا، ہمیں دنیا کے سوئے ہوئے ضمیر کو جھنجھوڑنا ہوگا ، اقوام متحدہ کشمیر کے حوالے سے اپنی قراردادوں پر عمل درآمد کو یقینی بنائے ۔

ان کا کہنا تھا کہ کشمیری عوام کے بے پایاں حوصلے اور جذبے کو دیکھتے ہوئے یقین سے کہا جا سکتا ہے کہ ان کی یہ بے مثال قربانیاں رنگ لائیں گی ۔ مقبوضہ کشمیر سے جبروستم کی سیاہ رات کا خاتمہ ہو گا اورآزادی کا سورج اس خطہ کو اپنی کرنوں سے ضرور منوّر کرے گا۔

ایوان صدر میں منعقدہ تقریب سے سابق وفاقی وزیر اورمسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما احسن اقبال،وزیردفاع پرویز خٹک،وفاقی وزیر اطلاعات چودھری فواد حسین ، وزیر امورکشمیر علی امین گنڈاپور،جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک،تحریک ِآزادی کشمیر کی سرگرم کارکن شائستہ صفی ،دفاعی تجزیہ نگار ڈاکٹر ماریہ سلطان اور دوسرے مقررین نے بھی خطاب کیا۔تقریب میں کل جماعتی حرّیت کانفرنس (ع) کے چیئرمین میرواعظ عمرفاروق کا ویڈیو پیغام بھی سنایا گیا۔

میر واعظ نے ایک ٹویٹ میں کشمیریوں کی مسلسل حمایت پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا ہے۔ انھوں نے لکھا ہے کہ’’ یوم یک جہتی کشمیر کے موقع پر کشمیری عوام پاکستان کا تحریکِ آزادیِ کشمیر کی بےلوث اور مسلسل حمایت پر شکریہ ادا کرتے ہیں اور پوری کشمیری قوم اس عزم کا اعادہ کرتی ہے کہ حقِ خودارادیت کے حصول تک اپنی حق پر مبنی جدوجہد جاری رکھے گی‘‘۔ جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین یاسین ملک نے بھی اپنے پیغام میں پاکستان اور اس کے عوام کا کشمیریوں کی حمایت پر شکریہ ادا کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں