.

سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان میں ایک دن کی تاخیر

شہزادہ محمد بن سلمان کے پروگرام میں تبدیلی، ہفتہ کی بجائے اتوار کو پاکستان آئیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کے پروگرام میں تبدیلی کی گئی ہے وہ اب 16 کے بجائے 17 فروری کو پاکستان آئیں گے۔ دفتر خارجہ نے اس تاخیر کی کوئی وجہ بیان نہیں کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق سعودی ولی عہد محمد بن سلمان 17 فروری کو پاکستان کا دورہ کریں گے تاہم باقی پروگرام اسی طرح ہے ان میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔ وزیراعظم عمران خان سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا ایئر پورٹ پراستقبال کرنے کے بعد وزیر اعظم ہاوس لائیں گے جہاں سعودی ولی عہد کو گارڈ آف آنر پیش کیا جائے گا۔

وزیراعظم ہاوس میں وزیراعظم عمران خان اورسعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی باضابطہ ملاقات ہوگی اور شام میں دونوں ممالک کے مابین مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط کئے جائیں گے۔ سعودی ولی عہد کو وزیراعظم ہاوس میں ہی عمران خان عشائیہ دیں گے۔ آرمی چیف جنرل قمرطجاوید باجوہ اور سینیٹ کے وفد کی ملاقات وزیراعظم ہاوس میں ہی ہوگی ۔

صدر عارف علوی 18 فروری کو سعودی ولی عہد کے اعزازمیں ظہرانہ دیں گے۔ ایوان صدر کے ظہرانہ میں سعودی ولی عہد کا 100 رکنی وفد شریک ہو گا۔ ظہرانہ میں وزرا اور اہم شخصیات کو بھی مدعو کیا گیا۔ سعودی ولی عہد ایوان صدرسے ہی واپس ایئر پورٹ روانہ ہو جائیں گے۔

سعودی ولی عہد کی سکیورٹی کی ذمہ داری 111 بریگیڈ کے سپرد کردی گئی جب کہ پولیس کے علاوہ ٹرپل ون بریگیڈ کی نو بی این اور رینجرز کے تین ونگ جبکہ لائٹ کمانڈو بی این کی دو بٹالین تعینات کی جائیں گی۔ ضرار اینٹی ٹیررسٹ یونٹ کی ایک بٹالین، ائیر ڈیفنس کی ایک بیٹری فضائی نگرانی کرے گ۔

ایس ایل سی ٹو ریڈا دو مختلف مقامات پر نصب کئے جائیں گے۔ ایوی ایشن کے چھ عدد ایم آئی سترہ طیارے فضائی نگرانی کریں گے۔ انٹیلی جینس کی دو بٹالین جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کی 28 ٹیمیں کام کریں گی اور ایمبولینسز میڈیکل عملہ سمیت لگ بھگ بارہ ہزار افسران وجوان سکیورٹی ڈیوٹی پر تعینات ہوں گے۔