.

سعودی ولی عہد کا تاریخی اور پُرتپاک استقبال، وزیراعظم عمران خان خود ڈرائیور بن گئے

وزیراعظم ہاؤس میں باضابطہ استقبالیہ تقریب کا انعقاد ، مسلح افواج کے چاق چوبند دستے نے گارڈ آف آنر پیش کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان عوام سے حکمرانوں تک محبت اور احترام کا تاریخی رشتہ استوار ہے ۔ دونوں کے اربابِ اقتدار ایک دوسرے سے گہری محبت اور عقیدت رکھتے ہیں۔اس کا تازہ مظہر وزیراعظم عمران خان کا سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی گاڑی خود ڈرائیو کرنا ہے اور وہ انھیں نورخاں ائیر بیس سے وزیراعظم ہاؤس اسلام آباد تک خود کار چلا کر لائے ہیں۔

سعودی ولی عہد اتوار کی شب ٹھیک آٹھ بجے چک لالہ، راول پنڈی میں نورخان ائیر بیس پر اپنے خصوصی طیارے سے اترے تو ان کے استقبال کے لیے پاکستان کی سیاسی اور عسکری قیادت مو جود تھی ۔ وزیراعظم عمران خان ، چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے طیارے کے قریب معززمہمان ولی عہد کا پُرتپاک استقبال کیا۔اس موقع پر کابینہ کے ارکان اور تینوں مسلح افواج کے سربراہان بھی موجود تھے۔ بچوں نے معزز مہمان کو والہانہ انداز میں گلدستہ پیش کیا۔

اس کے بعد وزیراعظم عمران خان خود معزز مہمان کی کار چلاتے ہوئے وزیراعظم ہاؤس اسلام آباد کی جانب روانہ ہوگئے۔ سعودی ولی عہد کی سرکاری دورے پر آمد کے موقع پر جڑواں شہروں میں سکیورٹی کے غیر معمولی سخت انتظامات کیے گئے تھے اور جگہ جگہ سکیورٹی فورسز کے اہلکار تعینات کیے گئے تھے۔چک لالہ ایئربیس سے وزیراعظم ہاؤس تک سعودی ولی عہد کے قافلے کی فضائی نگرانی بھی کی جاتی رہی ۔قافلے کے عین اوپر فضا میں ایک جدید ہیلی کاپٹر پرواز کرتا رہا تھا۔

وزیراعظم ہاؤس آمد پر سعودی ولی عہد اور ان کے وفد کے اعزاز میں باضابطہ استقبالیہ تقریب منعقد ہوئی اور مسلح افواج کے چاق چوبند دستے نے شہزادہ محمد بن سلمان کو گارڈآف آنر پیش کیا۔اس موقع پر دونوں ملکوں کے ترانے بجائے گئے۔اس کے بعد وزیراعظم نے معزز مہمان کا اپنی کابینہ کے ارکان سے تعارف کرایا۔

واضح رہے کہ عمران خان نے گذشتہ ماہ ابو ظبی کے ولی عہد شخ محمد بن زاید آل نہیان کا بھی اسی طرح پُرتپاک انداز میں استقبال کیا تھا اور خود کار چلا کر انھیں نور خان ائیربیس سے وزیراعظم ہاؤس تک لائے تھے۔

راول پنڈی سے دارالحکومت تک شاہراہوں کو رنگا رنگ خیر مقدمی بینروں سے سجایا گیا تھا اور ملک کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے ثقافتی طائفے بھی سعودی ولی عہد کے والہانہ استقبال کے لیے موجود تھے۔ فوجی ہوائی اڈے پر چاروں صوبوں، آزاد کشمیر، قبائل کے ثقافتی پروگرام اور علاقائی رقص پیش کیے گئے۔