ایران اپنی علاقائی حدود سے ماورا عزائم کو ترک کردے : شہزادہ ترکی الفیصل

ایران اپنے عوام کے بجائے حزب اللہ ،حوثیوں ،عراق اور شام میں مختلف ملیشیاؤں پررقوم نچھاور کررہا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے انٹیلی جنس ادارے کے سابق سربراہ اور شاہ فیصل مرکز برائے تحقیق اور اسلامی مطالعات کے سربراہ شہزادہ ترکی الفیصل نے العربیہ انگلش سے خصوصی انٹرویو میں کہا ہے کہ ایرانی حکومت کو اپنے عوام کی حالتِ زار بہتر بنانے پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے اور اپنی علاقائی حدود سے ماورا عزائم کو ترک کردینا چاہیے۔

انھوں نے کہا :’’ ایرانی حکومت نے اپنے عوام کو تو دیوالیہ بنا دیا ہے اور ان کے بجائے لبنان میں حزب اللہ ، یمن میں حوثیوں اور عراق اور شام میں اپنی پروردہ مختلف ملیشیاؤں پر رقوم لُٹانے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے‘‘۔

شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا کہ ’’فقہ جعفریہ کی خمینی تعلیمات کے مطابق یہ تشریح کی جاتی ہے .... اور اس کو موجودہ حکومت کی نظریاتی اساس کا حصہ بنایا گیا ہے کہ ایرانی نظام کو دنیا بھر میں شیعہ کمیونٹیوں ( کے تحفظ) کا ذمے دار ہونا چاہیے‘‘۔

انھوں نے العربیہ سے ایران کی موجودہ قیادت کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’ لوگ ایک انداز سے یہ خیال کرتے تھے کہ موجودہ صدر حسن روحانی ، جواد ظریف سمیت ان کی ٹیم اور دوسرے حضرات کچھ معقول ہیں ۔وہ خطے میں دوسرے ممالک کے ساتھ مل کر ایک مثبت کھلاڑی ہونے کا کردار ادا کرسکتے ہیں لیکن اس کے بالکل برعکس ہم انھیں خامنہ ای ہی کے راستے پر چلتا ہوا دیکھتے ہیں اور وہ دوسری ریاستوں میں ایرانی مداخلت کو توسیع دے رہے ہیں‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں