.

پاکستان آرمی نے کنٹرول لائن پر بھارت کا جاسوس ڈرون مارگرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان آرمی نے حدِمتارکہ جنگ ( کنٹرول لائن ) کے ساتھ راکھ چکری سیکٹر میں بھارت کا ایک جاسوس ڈرون مار گرایا ہے۔

پاک آرمی کے شعبہ تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل بریگیڈئیر جنرل آصف غفور نے ہفتے کے روز ایک ٹویٹ میں اطلاع دی ہے کہ بھارت کا یہ جاسوس ڈرون پاکستان کے سرحدی علاقے میں ڈیڑھ سو میٹر تک گھس آیا تھا۔

عسکری ذرائع کے مطابق بھارتی فوج کنٹرول لائن پر پاکستانی چوکیوں کی فضائی تصویر کشی اور انٹیلی جنس معلومات کے حصول کے لیے چار پروں والے ان ڈرون کو استعمال کرتی ہے اور اس کے بعد منتخبہ اہداف کو گولہ باری کا نشانہ بناتی ہے۔واضح رہے کہ قبل ازیں 2 جنوری کو بھی پاکستان آرمی نے بھارت کا ایک جاسوس طیارہ لائن آف کنٹرول پر مار گرایا تھا اور اس سے ایک روز پہلے بھارت کے ایک اور ڈرون کو مار گرایا تھا۔

پاکستانی علاقے میں بھار ت کا یہ جاسوس ڈرون مارگرائے جانے کی اطلاع ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب دونوں ملکوں کے درمیان 14 فروری کو بھارت کے زیر انتظام متنازع ریاست جموں و کشمیر کے ضلع پلوامہ میں سکیورٹی فورسز کے قافلے پر خودکش حملے کے بعد سے کشیدگی پائی جارہی ہے۔

اس حملے میں چوالیس بھارتی پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے تھے اور جیش محمد نے اس حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔بھارتی فضائیہ نے اس حملے کے ردعمل میں پاکستان کے شمال مغربی ضلع مانسہرہ میں واقع بالاکوٹ کے علاقے میں بین الاقوامی سرحد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایک خالی جگہ پر بمباری کی تھی مگر اس سے کوئی نقصان نہیں ہوا تھا۔

اس کے لڑا کا طیاروں نے اس حملے کے ایک روز بعد دوبارہ کنٹرول لائن کی خلاف ورزی کی تھی مگر پاک فضائیہ نے بھارت کے دو لڑاکا طیارے مار گرائے تھے اور اس کے ایک پائیلٹ ابھی نندن کو گرفتار کر لیا تھا۔تاہم پاکستان نے واقعے کے تین روز بعد ہی اس بھارتی پائیلٹ کو رہا کردیا تھا۔