دہشت گردی روکنے کے لئے پاکستان، کولمبو کی مدد کر سکتا ہے: وزیر اعظم عمران خان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے اپنے سری لنکن ہم منصب رانیل وکرم سنگھے کو بدھ کے روز فون کیا جس میں انھوں نے جان لیوا دہشت گردی کے حملوں کی مذمت کرتے ہوئے اس پیش کش کا اعادہ کیا کہ اسلام آباد دہشت گردی کے خلاف اقدامات میں کولمبو کی مدد کر سکتا ہے۔ اس امر کا اعلان وزیر اعظم سیکریٹریٹ نے بدھ کے روز ایک اعلامیے میں کیا گیا ہے۔

یونیسف کے مطابق ہلاکت خیز دھماکوں میں ابتک 359 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں ۔ مرنے والوں میں 45 بچے بھی شامل ہیں۔

عمران خان نے 22 اپریل کو سری لنکا کے تین مختلف شہروں کے ہوٹلوں اور گرجا گھروں پر ہونے والے بم دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی جس میں سیکڑوں انسانی جانیں ضائع ہوئیں۔ انہوں نے متاثرہ خاندانوں سے دلی تعزیت کی اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کی۔خوفناک دہشت گرد حملوں میں پانچ پاکستانیوں سمیت 500 سے زیادہ افراد زخمی ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ غم کی اس گھڑی میں پاکستانی قوم سری لنکن بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ دہشت گردی کے بد ترین شکار ہونے کی وجہ سے ہم سری لنکن بھائیوں کے درد کو سمجھ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کا کوئی ملک اور مذہب نہیں ہوتا، یہ پوری دنیا کے امن کے لیے خطرہ ہے۔

عمران خان نے بیان میں مزید کہا کہ پاکستان ہر طرح کی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے اور اس لعنت کے خاتمے کے لیے ہر ممکن مدد فراہم کرتا رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں