.

اچھوتے موضوعات پر بننے والی دو پاکستانی فلموں کی کانز فلمی میلے میں نمائش

’’رانی‘‘ خواجہ سراؤں کی زندگی جبکہ ’’درج‘‘ انسانی گوشت کھانے والوں کی کہانی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے شہر کانز میں جاری فلمی دنیا کے سب سے بڑے میلے میں پاکستانی خواجہ سراؤں کی زندگی پر بننے والی مختصر دورانیے کی فلم ’رانی‘ کی 20 سے 25 مئی تک نمائش جاری ہے جبکہ ایک اور پاکستانی فلم 'درج' کی اسی فلم فیسٹیول اسکریننگ کو ملکی سنیما انڈسٹری کے لیے ایک بڑا سنگِ میل قرار دیا جا رہا ہے۔

فلم ’’رانی‘‘ کی کہانی کراچی کی سڑکوں پر کھلونے فروخت کرنے والے ایک خواجہ سرا کی زندگی کے گرد گھومتی ہے جو بھیک مانگنے اور جسم فروشی کے بجائے کھلونے بیچ کر باعزت طریقے سے روزگار کمانے کو ترجیح دیتا ہے۔ ساتھ ہی ساتھ وہ ایک لاوارث بچے کو گود لے کر اُس کی پرورش بھی کرتا ہے اور اُسے معاشرے کے لیے اچھی مثال بنا کر پیش کرتا ہے۔

فلم کا مرکزی کردار ’رانی‘ پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ماڈل اور اداکارہ کامی سڈ نے نبھایا ہے۔ فلم کے ہدایتکار پاکستانی نژاد امریکی حماد رضوی ہیں جبکہ یہ فلم گرے سکیل پروڈکشن ہاؤس کی پیشکش ہے۔

مختصر دورانیے کی پاکستانی فلم ’رانی‘ کو اس سے قبل کئی بین الاقوامی ایوارڈز دیے جا چکے ہیں جن میں لاس اینجلس ایشین پیسیفک فلم فیسٹیول کا سپیشل جیوری ایوارڈ اور سان لوئی اوبسپو انٹرنیشنل فلم فیسٹول کا بہترین نیریٹو شارٹ ایوارڈ بھی شامل ہیں۔

دوسری جانب کانز فلمی میلے میں اسکریننگ تک کا سفر طے والی فلم 'درج' کے مصنف اور ڈائریکٹر شمعون عباسی ہیں۔ انہوں نے فلم یہ انسانی گوشت کھانے والے لوگوں کی کہانی بیان کرنے کے لئے تیار کی ہے۔ یاد رہے کہ واقعہ پاکستان کے علاقے بھکر میں پیش آیا تھا۔ فلم کو 11 اکتوبر کو ریلیز کیا جائے گا تاہم پچھلے ہفتے جاری ہونے والے فلم کے ٹریلر کو ٹیوب پر اب تک 10 لاکھ سے زائد لوگ دیکھ چکے ہیں۔