.

برٹش ائیرویز کی 11 سال کے بعد پہلی پرواز کی لندن سے اسلام آباد آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کی فضائی کمپنی برٹش ائیر ویز ( بی اے) نے قریباً گیارہ سال کے وقفے کے بعد پاکستان کے لیے اپنی پروازیں بحال کر دی ہیں اور اس کی پہلی پرواز سوموار کی صبح مقامی وقت کے مطابق سوا نو بجے اسلام آباد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اتری ہے۔

برٹش ائیر ویز کا بوئنگ 787 ڈریم لائنر لندن کے ہیتھرو ائیرپورٹ سے روانہ ہوا تھا اور اس میں 240 مسافر سوار تھے۔پاکستان ٹیلی ویژن کی اطلاع کے مطابق شہری ہوابازی کے وزیر غلام سرور خان اور دوسرے اعلیٰ حکام نے اسلام آباد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر آمد پر طیارے میں سوار مسافروں کا خیرمقدم کیا۔اس موقع پر اسلام آباد میں متعیّن برطانوی سفیر تھامس ڈریو بھی موجود تھے۔

برٹش ائیر ویز کے مطابق ’’اسلام آباد اور ہیتھرو (لندن) کے درمیان ہفتے میں تین پروازیں چلیں گی ‘‘۔مذکورہ بوئنگ طیارہ صبح گیارہ بج کر دس منٹ پر اسلام آباد سے مسافروں کو لے کر ہیتھرو کے لیے واپس روانہ ہوگیا۔

یادرہے کہ برٹش ائیر ویز نے 20 ستمبر 2008ء کو اسلام آباد کے میریٹ ہوٹل پر تباہ کن خودکش ٹرک بم حملے کے فوری بعد پاکستان کے لیے اپنی پروازیں معطل کردی تھیں۔اس بم دھماکے میں 54 افراد ہلاک اور 270 زخمی ہوگئے تھے۔فدائینِ اسلام نامی ایک غیر معروف گروپ نے اس ٹرک بم حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن حکام نے القاعدہ سے وابستہ جنگجوؤں پر اس بم دھماکے کا الزام عاید کیا تھا۔

اس حملے کے بعد پاکستان کی سکیورٹی فورسز نے طالبان جنگجوؤں ، القاعدہ اور دوسرے انتہا پسند گروپوں کے خلاف وفاق کے زیر انتظا م سابق قبائلی علاقوں ، بندوبستی شہروں اور علاقوں میں متعدد جنگی کارروائیاں کی ہیں اور ان کی کمر توڑ دی ہے اور اب قبائلی اضلاع میں امن لوٹ رہا ہے اور شہری سرگرمیاں بحال ہورہی ہیں۔