.

ہری پور:تربیلا جھیل میں کشتی الٹ گئی ،30 سے زیادہ افراد کی ہلاکت کا خدشہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے شمال مغربی صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع ہری پور میں دریائے سندھ میں ایک کشتی الٹ گئی ہے ۔کشتی پر خواتین اور بچوں سمیت پچاس سے زیادہ افراد سوا ر تھے ۔حادثے میں تیس سے زیادہ افراد کی ہلاکت کا خدشہ ہے جبکہ چودہ کو بچا لیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق دریائے سندھ پر تربیلا جھیل میں حادثے کا شکار ہونے والی کشتی صوبے کے ضلع شانگلہ میں واقع علاقے دیدال کامش سے روانہ ہوئی تھی اور وہ ضلع ہری پور آرہی تھی۔وہ برگ کے علاقے میں گنجائش سے زیادہ تعداد میں افراد سوار ہونے کی وجہ سے اپنا توازن برقرار نہ رکھ سکی اور دریا میں ڈوب گئی ۔

ہری پور کے اسسٹنٹ کمشنر عرب گل نے بتایا ہے کہ دریا سےایک بچے سمیت چار نعشیں نکال لی گئی ہیں اور چودہ افراد کشتی کے الٹنے کے بعد پیراکی کرتے ہوئے دریا کے کنارے پہنچ گئے تھے۔انھوں نے مزید بتایا ہے کہ کشتی ضلع ہری پور میں واقع تربیلا ڈیم کی جھیل میں ڈوبی ہے۔

حادثے کے فوری بعد دریا میں ڈوب جانے والے افراد کو نکالنے کے لیے امدادی کام شروع کردیا گیا تھا ۔عرب گل کے مطابق مقامی دکان دار بھی امدادی کام میں حصہ لے رہے ہیں اور پاکستان آرمی کے خصوصی سروسز گروپ کی ٹیموں کو بھی روانہ کردیا گیا ہے۔

علاقے کے ایک سماجی کارکن عباداللہ خان کے مطابق دریا میں ڈوبنے والے بیشتر افراد کا تعلق دیدال کامش سے ہے جہاں سے یہ کشتی روانہ ہوئی تھی اور یہ تمام افراد آپس میں قریبی رشتے دار بتائے جاتے ہیں۔علاقے کے مکینوں پر ان کی حادثے میں ڈوب مرنے کی خبر بجلی بن کر گری ہے اور پورے علاقے میں فضا سوگوار ہوگئی ہے۔بعض غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق کشتی پر کم سے کم ایک سو افراد تھے اور سال مال مویشی بھی لدے ہوئے تھے۔