.

پاکستان حج میڈیکل مشن میں 180 ڈاکٹرز شامل ہیں

45 لیڈی ڈاکٹرز اور 4 سو سے زائد نرسیں بھی حجاج کی دیکھ بھال پر مامور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سربراہ حج میڈیکل مشن پاکستان ڈاکٹر آصف علی نے کہا ہے کہ حج میڈیکل مشن جدہ، مکہ اور مدینہ میں مفت ابتدائی طبی سہولیات فراہم کر رہا ہے۔ سعودی ہسپتالوں میں بہترین اور مفت طبی سہولیات کی فراہمی پر سعودی حکومت کے شکر گزار ہیں۔

اسلام آباد سے وزارت کے ترجمان کے جاری بیان کے مطابق انہوں نے مزید کہا کہ وزارتِ مذہبی امور پاکستان، سعودی حکومت کے تعاون سے ہر سال حج کے موقع پر عازمینِ کرام کو جامع طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے انتظامات کرتی ہے۔

اس سال مکہ میں 35 بیڈ جبکہ مدینہ منورہ میں 10 بیڈ کا ہسپتال قائم کیا ہے۔ پاکستان حج میڈیکل مشن میں اس سال 180 ڈاکٹرز بشمول 45 لیڈی ڈاکٹرز شامل ہیں جبکہ 4 سو سے زائد نرسوں، ڈسپنسرز اور پیرا میڈیکل عملہ بھی اپنی خدمات سرانجام دے گا۔ انہوں نے بتایا ہے کہ حج مشن ہسپتال میں ابتدائی طبی سہولیات میں جدید لیبارٹری، ایکسرے، فارمیسی ، ایمرجنسی اور شعبہ دندان بھی موجود ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ مکہ مکرمہ میں حجاج کے مختلف رہائشی سیکٹرز میں 9 ڈسپنسریاں قائم کی گئی ہیں۔ مدینہ منورہ میں 2 ڈسپنسریاں جبکہ جدہ میں ایک ڈسپنسری کے ذریعے طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔

موجودہ حکومت اور وزارتِ مذہبی امور کی خصوصی کوشش سے ایمرجنسی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ایمبولینسوں کی تعداد 9 سے بڑھا کر 18 کر دی گئی ہے۔ اس وقت روزانہ کی بنیاد پر 5 سو سے زائد مریضوں کو طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں جس میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔

پیچیدہ مریضوں کو سعودی ہسپتالوں میں ریفر کیا جاتا ہے جہاں تمام تر علاج اینجیو گرافی اور اینجیو پلاسٹی سمیت تمام تر علاج اور دیگر سہولیات مفت ہیں۔ سربراہ حج میڈیکل مشن پاکستان نے عازمین حج کو بہترین طبی سہولیات کی فراہمی ممکن بنانے پر سعودی حکومت سے اظہارتشکرکیا ہے۔