کشمیر تنازع کے حوالے سے ٹرمپ کا مودی اور عمران خان سے پھر رابطہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیر اعظم عمران خان سے بات چیت کی ہے، اس سے پہلے صدر ٹرمپ کی بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی بات چیت ہوئی۔

ایک بیان میں وزیر خارجہ نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی مودی سے بات چیت سے پہلے بھی 16 اگست کو عمران خان کی ٹرمپ سے فون پر بات ہوئی تھی، اس گفتگو میں صدر ٹرمپ نے عمران خان سے کہا تھا کہ وہ مودی سے بات کریں گے۔

انہوں نے کہا ہے کہ آج امریکی صدر نے نریندر مودی سے بات کی، ٹرمپ نے مودی سے کہا کہ خطے کا امن برقرار رہنا چاہیے اور انہوں نے عمران خان کو اس سے آگاہ کیا۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ آج وزیر اعظم عمران خان نے صدر ٹرمپ کو مودی کے اقدام کی وجہ سے خطے کو لاحق صورتحال سے آگاہ کیا، وزیر اعظم نے صدر ٹرمپ سے کہا کہ مودی سرکار کے 5اگست کے یک طرفہ اقدام سے خطے کے امن و امان کو خطرات نے دوچار کر دیا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ عمران خان نے ٹرمپ کو بتایا کہ مودی کے اقدامات کے پیچھے مسلم اکثریت کے علاقے کو اقلیت میں بدلنے کی سوچ کارفرما تھی۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 15 دن سے کرفیو نافذ ہے جس کی وجہ سے شدید انسانی بحران پیدا ہوچکا ہے، وزیر اعظم عمران خان نے صدر ٹرمپ سے اس بحران کا حل نکالنے کا کہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے امریکی صدر کو بتایا کہ ہندوستان کے یہ یکطرفہ اقدامات بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی نفی کرتے ہیں۔

ادھر وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو فون کرکے پاک بھارت تناؤ کم کرنے اور خطے میں امن قائم رکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ترجمان وائٹ ہاؤس ہوگن گڈلے کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارتی وزیراعظم سے تناؤ کم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ ہوگن گڈلے کے مطابق دونوں رہنماؤں کے درمیان معاشی اور تجارتی تعلقات اور دوبارہ ملاقات کرنے کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں