.

پاکستان کا بھارتی وزیراعظم کو اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دینے سے انکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا ہے۔اس کا کہنا ہے کہ اس نے یہ فیصلہ بھارت کے زیر انتظام ریاست مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے ردعمل میں کیا ہے۔

پاکستان نے گذشتہ چند ہفتوں کے دوران میں تیسری مرتبہ بھارتی صدر اور وزیراعظم کو اپنی فضائی حدود سے گزرنے کی اجازت نہیں دی ہے۔گذشتہ ماہ بھارتی صدر رام ناتھ کووند اور وزیراعظم نریندر مودی کی پاکستان کی فضائی حدود استعمال کرنے کی درخواست مسترد کردی گئی تھی۔

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ بھارتی وزیراعظم ہماری فضائی حدود استعمال کرنا چاہتے تھے لیکن ہم نے آج کشمیریوں سے اظہارِ یک جہتی کے لیے یومِ سیاہ کے پیش نظر انھیں اجازت دینے سے انکار کردیا ہے۔کشمیری بھارتی سکیورٹی فورسز کے ہاتھوں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی مذمت کررہے ہیں۔‘‘

انھوں نے کہا کہ اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمشنر کو اس فیصلے سے آگاہ کردیا گیا ہے۔انھوں نے یہ نہیں بتایا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کہاں جانے کے لیے پاکستان کی فضائی حدود استعمال کرنا چاہتے تھے۔

لیکن پاکستان کے ایک اعلیٰ عہدہ دار کا کہنا ہے کہ بھارتی وزیراعظم سعودی عرب جانے کے لیے پاکستان کی فضائی حدود سے گذرنا چاہتے تھے۔وہ وہاں سرمایہ کاری سے متعلق ایک کانفرنس میں شرکت کے لیے جانا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان نے اس سال فروری میں بھارت کے لیے اپنی فضائی حدود کو بند کردیا تھا۔تب مقبوضہ کشمیر میں ایک خود کش بم دھماکا ہوا تھاجس کے نتیجے میں چالیس سے زیادہ بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔اس واقعے کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان سخت کشیدگی پیدا ہوگئی تھی۔اس کے بعد بھارت نے پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بالا کوٹ کے علاقے میں بم گرائے تھے جبکہ پاکستان نے بھارت کا ایک لڑاکا طیارہ آزاد کشمیر کی حدود میں مار گرایا تھا اور اس کے پائیلٹ کو گرفتار کر لیا تھا۔

پاکستان نے جولائی میں شہری ٹریفک کے لیے اپنی فضائی حدود کو دوبارہ کھول دیا تھا لیکن اگست میں بھارت کے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت کو ختم کرنے کے اقدام کے خلاف بھارتی طیاروں کے لیے دوبارہ اپنی فضائی حدود بند کردی تھیں۔بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے اس اقدام کے خلاف کشمیری عوام سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں جبکہ پاکستان ہر بین الاقوامی فوم پرمسئلہ کشمیر کو اٹھارہا ہے اور بھارتی سکیورٹی فورسز کی چیرہ دستیوں کا پردہ چاک رہا ہے۔