.

وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق سرطان سے جنگ لڑتے چل بسے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی اور حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی رکن اور سرکردہ رہ نما نعیم الحق مہلک مرض سرطان سے جنگ لڑتے ہفتے کے روز چل بسے ہیں۔ ان کی عمر ستر سال تھی۔

وہ کراچی کے ایک اسپتال میں زیر علاج تھے۔ان کے خاندان اور حکمراں جماعت کے لیڈروں نے الگ الگ بیانات میں ان کی وفات کی تصدیق کی ہے۔ان کی نماز جنازہ اتوار کو عصر کی نماز کے بعد ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی کراچی میں واقع خیابان اتحاد میں ادا کی جائے گی۔

مرحوم وزیراعظم عمران خان کے دیرینہ دوست تھے۔وہ پی ٹی آئی کے دس بانی ارکان میں سے ایک تھے۔وہ جماعت کے صوبہ سندھ کے سابق صدر رہے تھے۔وہ اس کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے تھے۔

جولائی 2018ء میں منعقدہ عام انتخابات کے بعد جب پی ٹی آئی مرکز میں برسراقتدار آئی تو انھیں وزیراعظم کا معاون خصوصی برائے سیاسی امور مقرر کیا گیا تھا۔

پی ٹی آئی کے سرکاری ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ٹویٹ میں نعیم الحق کو ’’مخلص پاکستانی ،وفادار دوست اور حلیم الطبع انسان‘‘ قراردیا گیا ہے۔اس میں مزید کہا گیا ہے کہ ان کے انتقال سے پی ٹی آئی کے پورے خاندان کو صدمہ پہنچا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے ان کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ ’’وہ اپنے دیرینہ دوست نعیم الحق کی وفات پر ٹوٹ کر رہ گئے ہیں۔‘‘

انھوں نے مزید کہا ہے کہ’’پی ٹی آئی کے گذشتہ 23 سالہ سرد وگرم حالات کے دوران میں وہ ہمیشہ میرے ساتھ کھڑے رہے ہیں۔جب کبھی ہم مشکل صورت حال سے دوچار ہوئے تو ہمیشہ معاونت کے لیے وہ ہمارے ساتھ کھڑے ہوئے ہیں۔‘‘

وزیراعظم ٹویٹر پر لکھتے ہیں:’’گذشتہ دو سال کے دوران میں ، میں نے انھیں حوصلے اور امید کے ساتھ کینسر سے جنگ لڑتے دیکھا ہے۔وہ اپنی زندگی کے آخری دن تک جماعت کے امور میں شریک رہے ہیں اور حالات اجازت دیتے تو کابینہ کے اجلاسوں میں بھی وہ شریک ہوتے رہے تھے۔ ان کی وفات سے کبھی نہ پُر ہونے والا خلا پیدا ہو گیا ہے۔‘‘

وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی ، ڈاکٹر شیریں مزاری ، فواد چودھری اور حکمراں جماعت کے دوسرے لیڈروں نے بھی نعیم الحق کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ انھوں نے سرطان ایسے موذی مرض کا بہادری اور دلیری سے مقابلہ کیا ہے۔

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور پاکستان مسلم لیگ نواز کے صدر شہباز شریف نے ایک ٹویٹ میں ان کی وفات پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔انھوں نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’’نعیم الحق کی وفات کا سن پر بہت دکھ پہنچا ہے۔میں سوگوار خاندان اور پی ٹی آئی سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتا ہوں۔‘‘

نعیم الحق کی وفات پر زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے سوشل میڈیا پر تعزیت کا اظہار کیا جارہا ہے اور ٹویٹر پر ’’آرآئی پی نعیم الحق‘‘ سب سے ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ہے۔پی ٹی آئی اور دوسری سیاسی جماعتوں کے کارکنان ، قائدین ، صحافی حضرات اور عام صارفین اپنے اپنے تعزیتی پیغام میں مرحوم کو ان کی سیاسی خدمات پر خراجِ عقیدت پیش کررہے ہیں۔