.

مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کا تحفظ یقینی بنایا جائے:انتونیو گوتیریس

پاکستان اور بھارت میں مذاکرات کا حامی ہوں،انسانی حقوق کے حوالے سے اقوام متحدہ کا مؤقف بڑا واضح ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیریس نے کہا ہے کہ بھارت کے زیر انتظام ریاست مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔کشمیر کے علاوہ پوری دنیا میں انسانیت کا احترام کیا جانا چاہیے۔

وہ اتوار کو اسلام آباد میں موسمیاتی تبدیلی کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ انھوں نےکہاکہ آبی تقسیم پر پاکستان اور بھارت میں تاریخی معاہدہ موجود ہے۔ بھارت سے موثر ڈائیلاگ سے پانی کی تقسیم کا مسئلہ حل ہوسکتا ہے۔پانی تنازع کا باعث بننے کے بجائے امن کاذریعہ ہونا چاہیے ۔

انھوں نے کہا کہ میں پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کا حامی ہوں۔مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پاسداری انتہائی ضروری ہے۔ انسانی حقوق کے حوالے سے اقوام متحدہ کا مؤقف بڑا واضح ہے۔

انھوں نے کہا کہ ترقیاتی اہداف کو موسمیاتی تبدیلیوں سے خطرات ہیں۔ہمارا مشترکہ وژن موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنا اور پائیدار ترقی ہے۔پائیدار ترقی کے اہداف انسانی ترقی کے لیے ضروری ہیں۔پائیدار ترقی کے اہداف کا حصول تمام ممالک اور اقوام کے لیے ضروری ہے ۔ پاکستان پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کے لیے کاوشیں کررہا ہے۔

عالمی ادارے کے سیکریٹری جنرل نے کہاکہ غربت کا خاتمہ پاکستان کی پالیسی کا بنیادی حصہ ہے۔کامیاب جوان پروگرام ایک کروڑ نوجوانوں کو روزگار دینے کا منصوبہ ہے۔ پاکستان میں صحت سب کے لیے کی سہولتوں کی فراہمی کے وژن سے بہت متاثر ہوں۔پاکستان کوصحت سمیت مختلف شعبوں میں چیلنجز درپیش ہیں ۔ترقی کے حصول میں دنیا کو بہت سی رکاوٹوں کا سامنا ہے۔

انتونیو گوتیریس نے کہاکہ دنیا اور پاکستان کو موسمیاتی تبدیلیوں سے خطرات درپیش ہیں۔ سیلاب اور قدرتی آفات سے پاکستان بہت متاثر ہوا ہے۔اس کا 80 فی صد پانی زراعت کے لیے استعمال ہوتا ہے۔ پاکستان میں ترقیاتی اہداف کو موسمیاتی تبدیلیوں سے خطرات لاحق ہیں۔ان سے نمٹنے کے لیے عالمی قائدین کو مل جل کر کام کرنا ہوگا۔

انھوں نے پاکستان میں شجرکاری کے لیے بلین ٹری سونامی اور گرین پاکستان مہم کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ صاف اور سبز پاکستان منصوبہ قابل تعریف ہے۔ مقامی سطح پر کیے گئے اقدامات موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لیے مدد گار ثابت ہوں گے۔