.

قومی سلامتی کمیٹی کا ملک بھر کے تعلیمی ادارے 5 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ

یوم پاکستان کی پریڈ منسوخ، مسلح افواج سمیت تمام ادارے کرونا کی روک تھام کے لیے کام کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قومی سلامتی کمیٹی نے کورونا وائرس پھیلنے کے خطرے کے پیش نظر ملک بھر کے تمام تعلیمی ادارے 5 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ کر لیا۔ کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے 23 مارچ کو یوم پاکستان کی پریڈ منسوخ کردی گئی ہے۔

اسلام آباد میں ہونے والے قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ اور عسکری قیادت نے بھی شرکت کی۔

اجلاس کے بعد سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹوئٹ کرتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ 'قومی سلامتی کمیٹی نے ملک بھر کے تعلیمی ادارے 5 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے، تعلیمی اداروں میں نجی وسرکاری اسکولز، کالجز، جامعات اور مدارس شامل ہیں۔' ان کا کہنا تھا کہ 'تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق 27 مارچ کو مشاورت کی جائے گی اور آگے کا فیصلہ کیا جائے گا۔'

واضح رہے کہ دنیا بھر کو متاثر کرنے والی عالمی وبا پاکستان میں بھی پھیلتی جا رہی ہے اور اس سے سب سے زیادہ صوبہ سندھ کا دارالحکومت کراچی متاثر ہو رہا ہے جہاں جمعہ کو ایک اور نئے کیس کی تصدیق کردی گئی ہے۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق 52 سالہ شخص 2 روز قبل اسلام آباد سے کراچی پہنچا تھا جس میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔ صوبائی محکمہ صحت کے مطابق سندھ میں کورونا وائرس کا شکار مریضوں کی مجموعی تعداد 15 ہوگئی ہے جس میں سے 14 کیسز کراچی جبکہ ایک حیدرآباد میں سامنے آیا۔

یوم پاکستان کی پریڈ منسوخ

وزیراعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی نے کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے 23 مارچ کو یوم پاکستان کی پریڈ منسوخ کردی گئی ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے قومی سلامتی کمیٹی کا اہم ترین اجلاس ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ ملکی سرحدوں کے ساتھ ٹھوس اقدامات کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حفاظتی اقدامات کے تحت ملک بھر تمام تعلیمی ادارے بھی 5 اپریل تک بند رکھے جائیں۔ اس بات پر بھی اتفاق ہوا کہ مسلح افواج سمیت تمام ادارے کورونا کی روک تھام کیلئے مل کر کام کریں گے۔

قومی سلامتی کمیٹی نے کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر 23 مارچ یوم پاکستان کی پریڈ بھی منسوخ کردی، عوامی اجتماعات اور شادی بیان کی تقریبات پر بھی پابندی عائد کردی گئی۔