.

حکومت اپوزیشن آمنے سامنے: ’’پی ڈی ایم عوام کی زندگیوں سے کھیل رہی ہے‘‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پشاور میں حکومت مخالف اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ ’’پی ڈی ایم‘‘ کے جلسے کے معاملے پر حکومت اور اپوزیشن آمنے سامنے حکومت آ گئے ہیں۔ حکومت نے خیبر پختونخوا میں کرونا کیسز بڑھنے پرجلسوں کے منتظمین کے خلاف مقدمے درج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ سخت لاک ڈاؤن کے خواہشمند پی ڈی ایم ارکان غیر ذمہ دارانہ سیاست کر رہے ہیں۔ پی ڈی ایم غیر ذمہ دارانہ سیاست کرکے عوام کی زندگیوں سےکھیل رہی ہے، جبکہ وفاقی وزیراطلاعات شبلی فرازنے کہا ہے کہ عدالتی اور حکومتی احکامات کے بعد جلسے منعقد کرنے کا اخلاقی جواز نہیں۔ خیبر پختونخوا میں کورونا کیسز بڑھنے کی صورت میں اپوزیشن رہنماؤں اور جلسوں کے منتظمین پرایف آئی آر درج کرائی جائی گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم سیاسی کھیل، کھیل رہی ہے۔ جلسہ عدالتی حکم کی خلاف ورزی ہے۔ پی ڈی ایم کے وہ اراکین جو پہلے سخت ترین بندشیں چاہتے تھے اور مجھ پر طنز وتنقید کے نشتر چلایا کرتے تھے آج لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ڈال کر نہایت عاقبت نا اندیشانہ سیاست کر رہے ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ہفتہ کے دن کئے گئے ایک ٹویٹ میں وزیر اعظم نے کہا کہ کیفیت یہ ہے کہ عدالتی احکامات ہوا میں اڑا کر کیسز میں نہایت تیز اضافے کے باوجود یہ جلسے پر مصر ہیں۔

وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فرازنے کہا کہ ‏اپوزیشن غیر ذمہ داری کا ثبوت دینے پر تلی ہوئی ہے۔ انکا جلسے منعقد کرنے پر بضد ہونا ان کی غیر جمہوری سوچ اور غیر ذمہ دارانہ رویے کا عکاس ہے۔ عدالتی اور حکومتی احکامات کے بعد جلسے منعقد کرنے کا کوئی قانونی اور اخلاقی جواز نہیں بنتا۔ شبلی فراز نے کہا کہ ‏ذاتی مفاد کیلئے عوام کی صحت اور زندگیوں سے کھیلنا سب سے بڑی خود غرضی ہے۔