.

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں ٹریفک حادثات، 8 افراد جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے زیر انتظام آزاد کشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد کے نواح میں علی الصبح دو مختلف ٹریفک حادثات میں ماں بیٹے سمیت آٹھ افراد جاں بحق اور چھ زخمی ہو گئے۔

پاکستانی ذرائع ابلاغ نے پولیس کے حوالے سے بتایا کہ دونوں حادثے پہاڑی رابطہ سڑکوں پہ برف باری کے بعد جمے کورے پر پھسلن کے باعث پیش آئے۔پہلا حادثہ صبح سات بجے پیش آیا جب ایک ہائی ایس ویگن پھسلن کے باعث تولہ کے مقام پر سڑک سے دو سو گز نیچے ایک کھیت میں جا گری۔دچھور فقیراں سے گڑھی ڈوپٹہ قصبہ میں آنے والی اس ہائی ایس میں ڈرائیور سمیت چھ افراد سوار تھے۔

دوسرا حادثہ ایک جیپ کو مُوری موڑ نامی مقام پر صبح 9 بجے اس وقت پیش آیا جب وہ ست پِہالی گاوٴں سے مرکزی شاہراہ پر واقع کرولی گاوٴں آرہی تھی، یہ حادثہ بھی کورے پر پھسلن کی وجہ سے پیش آیا۔

اطلاعات کے مطابق دوسرا حادثہ پہلے حادثے سے زیادہ خوفناک تھا کیونکہ اس میں گاڑی پتھریلی ڈھلوان پر لڑھکتی ہوئی دو سو گز نیچے جاگری جس کے نتیجہ میں ماں بیٹے سمیت 5 افراد موقع پر جاں بحق اور میاں بیوی سمیت تین دیگر شدید زخمی ہوئے۔

دریں اثنا آزادکشمیر کے وزیراعظم نے ایک ٹوئٹر پیغام میں ٹریفک سڑک کے حادثات میں آٹھ افراد کی ہلاکت اور چھ دیگر کے زخمی ہونے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے جاں بحق افراد کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحتابی کی دعا کی۔انہوں نے عوام سے اپیل بھی کی کہ وہ بارش و برف باری سے متاثرہ پہاڑی علاقوں میں ڈرائیونگ کرتے ہوئے احتیاط سے کام لیں۔

گزشتہ دنوں پاک ایران سرحد پر چاغی پر ہونے والے حادثے میں کم از کم 2 افراد جاں بحق اور 6 زخمی ہو گئے تھے۔ اس سے قبل مظفرآباد میں پھسلن کی وجہ سے پیش آنے والے ٹریفک حادثے میں ایک خاتون جاں بحق اور بچوں سمیت 9 افراد زخمی ہو گئے تھے۔

واضح رہے کہ موسم سرما میں پہاڑی علاقوں میں برف باری اور بارش کے باعث ہونے والی پھسلن جبکہ میدانی علاقوں میں شدید دھند کی وجہ سے اکثر خطرناک حادثات رونما ہوتے رہتے ہیں۔