.

سینیٹ انتخابات:اسلام آباد سے یوسف رضا گیلانی منتخب،حکومتی امیدوارحفیظ شیخ ہار گئے

حکمران جماعت پی ٹی آئی نے سب سے زیادہ نشستیں جیت لیں، پیپلزپارٹی دوسرے، مسلم لیگ ن تیسرے نمبر پر!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کی پارلیمان کے ایوانِ بالا سینیٹ کے انتخابات میں حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)نے سب سے زیادہ نشستیں جیت لی ہیں جبکہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سے حزب اختلاف کے امیدوار، سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی سینیٹر منتخب ہوگئے ہیں۔انھوں نے حکمراں جماعت کے امیدوار وزیرخزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ کو شکست دی ہے۔

قومی اسمبلی کے 340 ارکان نے ایوان میں اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔قومی اسمبلی کی ایک نشست خالی ہے اور ایک رکن نے اپنا حق رائے دہی استعمال نہیں کیا۔ان میں سے 169 ارکان نے سینیٹ کی عمومی نشست کے لیے پاکستان پیپلزپارٹی کے امیدوار سید یوسف رضاگیلانی کے حق میں ووٹ دیا ہے اور 164 ارکان نے ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ کے حق میں ووٹ ڈالے ہیں۔سات ارکان اسمبلی کے ووٹ غلط نشان لگانے کی وجہ سے مسترد کردیے گئے ہیں۔

اسلام آباد سے خواتین کے لیے مخصوص نشست پر پی ٹی آئی کی امیدوار فوزیہ ارشد کامیاب ہوگئی ہیں۔انھوں نے 174 ووٹ حاصل کیے ہیں۔اس طرح انھوں نے حکومتی امیدوار ڈاکٹر حفیظ شیخ کے مقابلے میں 10 ووٹ زیادہ حاصل کیے ہیں۔ان کے مدمقابل پاکستان مسلم لیگ نواز کی امیدوار فرزانہ کوثر نے 161 ووٹ حاصل کرسکی ہیں۔

بدھ کو سینیٹ کی 37 خالی نشستوں کے انتخاب کے لیے قومی اسمبلی اور سندھ ، خیبرپختونخوا اور بلوچستان کی صوبائی اسمبلیوں میں ووٹ ڈالے گئے۔ان نشستوں پر کل 78 امیدواروں کے درمیان مقابلہ تھا۔پولنگ صبح نو بجے شروع ہوئی اور شام پانچ بجے تک جاری رہی۔ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد الیکشن کمیشن پاکستان نے نومنتخب سینیٹروں کے ناموں کا اعلان کردیا ہے۔صوبہ پنجاب سے گیارہ سینیٹر پہلے ہی بلا مقابلہ منتخب ہوچکے ہیں۔

الیکشن کمیشن کے مطابق سینیٹ کی خالی نشستوں پر انتخابات میں حکمران جماعت نے سب سے زیادہ 18نشستیں جیتی ہیں۔ان میں پنجاب کی پانچ بلامقابلہ نشستیں بھی شامل ہیں۔اس طرح سینیٹ میں اب اس کی نشستوں کی تعداد 25 ہوگئی ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی کی سینیٹ میں اب 21 نشستیں ہوگئی ہیں۔

ان انتخابات کے نتیجے میں سینیٹ میں حزب اختلاف کی بڑی جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کی نشستوں کی تعداد کم ہوگئی ہے۔اس کے 17 سینیٹر ریٹائر ہوئے تھے مگر اس کے صرف پنجاب سے پانچ سینیٹر بلامقابلہ منتخب ہوئے ہیں اور کسی اسمبلی سے اس کا کوئی امیدوار نہیں جیتا۔

صوبہ بلوچستان کی اسمبلی سے پی ٹی آئی حکومت کی اتحادی جماعت بلوچستان عوامی پارٹی (باپ) کے چھے امیدوار کامیاب ہوئے ہیں۔اب سینیٹ میں اس کے ارکان کی تعداد 13 ہوگئی ہے۔

نومنتخب سینیٹروں کے نام اور ان کی جماعتی وابستگی کی تفصیل حسب ذیل ہے:
اسلام آباد
یوسف رضا گیلانی۔۔۔۔۔ پی پی پی (سینیٹ عمومی نشست)
فوزیہ ارشد ۔۔۔۔۔۔پی ٹی آئی (خواتین خصوصی نشست)

صوبہ سندھ
پلوشہ خان۔۔۔۔۔ پی پی پی (خواتین)
سلیم مانڈوی والا ۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (عمومی نشست)
شیری رحمان ۔۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (عمومی نشست)
فاروق حمید نائیک ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (ٹیکنوکریٹ)
سیف اللہ ابڑو ۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (ٹیکنوکریٹ)
خالدہ عتیب۔۔۔۔۔۔۔۔۔ایم کیوایم پاکستان(خواتین)
جام مہتاب ڈاہر۔۔۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (عمومی)
تاج حیدر۔۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (عمومی)
فیصل واؤڈا۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (عمومی)
فیصل سبزواری ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ایم کیو ایم۔ پی (عمومی)
شہادت اعوان ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی پی پی (عمومی)

صوبہ خیبر پختونخوا
ثانیہ نشتر ۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (خواتین)
فلک ناز۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (خواتین)
دوست محمد خان۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (ٹیکنوکریٹ)
ہمایوں مہمند ۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (ٹیکنوکریٹ)
گوردیپ سنگھ ۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (اقلیت)
شبلی فراز ۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی(عمومی نشست)
محسن عزیز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (عمومی)
لیاقت خان ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (عمومی)
فیصل سلیم الرحمان۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی(عمومی)
ذیشان خانزادہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پی ٹی آئی (عمومی)
ہدایت اللہ خان۔۔۔۔۔۔۔۔ عوامی نیشنل پارٹی(عمومی)
مولانا عطاء الرحمٰن ۔۔۔۔۔۔۔۔ جے یو آئی –ایف (عمومی)

صوبہ بلوچستان سے نومنتخب سینیٹروں کے نام یہ ہیں:
سرفراز بگٹی ۔۔۔۔۔ باپ (عمومی)
منظوراحمد ۔۔۔۔۔ باپ (عمومی)
شہزادہ احمدعمر احمدزئی ۔۔۔۔۔ باپ (عمومی)
مولانا عبدالغفورحیدری ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جے یوآئی-ایف (عمومی)
محمد قاسم ۔۔۔۔۔ بی این پی (عمومی)
عبدالقادر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آزاد (عمومی)
عمرفاروق ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اے این پی (عمومی)
سعید احمد ہاشمی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ باپ (ٹیکنوکریٹ)
کامران مرتضیٰ ۔۔۔۔۔۔۔ جے یو آئی ۔ ایف (ٹیکنوکریٹ)
نسیمہ احسان ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آزاد (خواتین)
ثمینہ ممتاز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ باپ (خواتین)
دنیش کمار ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ باپ (اقلیت)۔