.

الیکشن کمیشن فرائض ادا کرنے میں ناکام، مستعفی ہو جائے: حکومت

آئندہ الیکشن شفاف ہوں تاکہ کوئی آواز نہ اٹھے؛ شفقت محمود ، فواد چوہدری اور شبلی فراز کی پریس کانفرنس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حکومت نے الیکشن کمیشن آف پاکستان پر فرائض ادا کرنے میں ناکامی کا سنگین الزام کرتے ہوئے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا۔ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ آئندہ الیکشن شفاف ہوں کوئی آواز نہ اٹھے۔

اس امر کا اظہار وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری اور سینیٹر شبلی فراز کے ہمراہ پی آئی ڈی کے میڈیا سنٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

وفاقی وزیر تعلیم نے کہا کہ الیکشن کمیشن ہر لحاظ سے ناکام ہو چکا ہے۔ انہوں نے صاف شفاف منصفانہ انتخابات کے بارے میں متعلقہ آئینی شق بھی پریس کانفرنس میں پڑھ دی اور کہاکہ آئین پر عملدرآمد نہیں ہو رہا۔ الیکشن کمیشن کو بحیثیت مجموعی استعفیٰ دینا چاہیے۔عوام کا اعتماد الیکشن کمیشن سے اٹھ چکا ہے۔ نیا الیکشن کمیشن بنے جس پر سب کا اعتماد ہو۔ چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن کے اراکین فوری استعفیٰ دیں۔ پارلیمان کو موقع دیا جائے کہ نیا الیکشن کمیشن تشکیل دیا جائے، جس پر سب کا اعتماد ہو۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن نیوٹرل ایمپائر کا کردار ادا نہیں کر رہا ہے۔ تحریک انصاف سب سے بڑی جماعت ہے اسے الیکشن کمیشن پر کوئی اعتماد نہیں، الیکشن کمیشن کے خلاف کوئی ریفرنس دائر نہیں کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن جب سے ہورہے ہیں ہر بار خریدو فروخت کی باتیں ہوتی ہیں۔2018 میں ہارس ٹریڈنگ ہوئی وڈیو سامنے آئی وزیراعظم عمران خان نے پہلے دن سے اوپن بیلٹنگ کا مطالبہ اور کوشش کی ہے، نواز شریف نے اپنی حکومت میں اوپن بیلٹ لانے کی بات تو سیاسی اختلاف کے باوجود ہم نے حمایت کی، عمران خان چاہتے ہیں سیاست سے پیسے کا کردار ختم کر کے شفافیت لائی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم پارلیمنٹ میں بل اور آئینی ترمیم لائے، سپریم کورٹ تک گئے، سپریم کورٹ نے کہا آئینی ترمیم ضروری لیکن الیکشن کمیشن کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی چاہیے، ہمارا ایک وفد سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں الیکشن کمیشن گیا، ہم نے الیکشن کمیشن سے استدعا کی کہ بیلٹ پیپر ایسا بنائیں جو ضرورت پڑنے پر چیلنج کیا جاسکے، ویڈیو میں سب نے دیکھا کہ کیسے ووٹ خریدنے کی کوشش کی گئی مگر کمیشن ناکام رہا ۔

شفقت محمود نے کہا کہ آج صورتحال یہ ہے کوئی سیاسی جماعت سینیٹ الیکشن سے مطمئن نہیں، یہ ساری چیزیں عمران خان کے اس موقف کی تائید کرتی ہیں، یہ ناکامی الیکشن کمیشن آف پاکستان کی ہے، الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری ادا کرنے میں مکمل ناکام ہو چکا ہے، اس پر کسی کو اعتماد نہیں رہا۔

وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ عمران خان کرکٹ میں بھی نیوٹرل امپائر لے کر آئے، الیکشن کمیشن کو نیوٹرل ہونا چاہیئے، لیکن موجودہ الیکشن کمیشن نیوٹرل نہیں، فی الحال الیکشن کمیشن کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کرنے کا ارادہ نہیں.