.

پاک افغان سرحد پردہشت گردوں کا حملہ ، ایف سی کے 4 جوان شہید ،6 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان اور افغانستان کے درمیان واقع سرحد پر دہشت گردوں کے حملے فرنٹیئرکور کے چار فوجی شہید اور چھے زخمی ہوگئے ہیں۔

پاکستان آرمی کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے بدھ کو ایک بیان میں بتایا ہے کہ ’’صوبہ بلوچستان کے ضلع ژوب میں واقع سرحد پرافغانستان کی طرف سے دہشت گردوں نے ایف سی کے فوجیوں پر حملہ کیا ہے۔اس وقت ایف سی کے اہلکار سرحد پر باڑ لگانے کی سرگرمی میں مصروف تھے۔‘‘

بیان کے مطابق ایف سی کے فوجیوں نے دہشت گردوں پر جوابی فائرنگ کی ہے۔زخمی فوجیوں کو کمبائنڈ ملٹری اسپتال (سی ایم ایچ) کوئٹہ میں منتقل کردیا گیا ہے۔

دہشت گردوں کے حملے میں شہید فوجیوں کے نام حوالد نورزمان ، سپاہی شکیل عباس ، سپاہی احسان اللہ اور نائیک سلطان بتائے گئے ہیں۔

وزیرداخلہ شیخ رشید نے ایک ٹویٹ میں ایف سی کے جوانوں پر دہشت گردوں کے اس حملے کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ’’دہشت گرد پاکستان کی مسلح افواج کے حوصلے اور عزم کو پست نہیں کرسکتے۔پاکستان اور افغانستان کے درمیان سرحد پر باڑ لگانے کا عمل کسی بہرصورت مکمل کیا جائے گا۔‘‘

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف نے بھی اس بزدلانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔انھوں نے شہید فوجیوں کے خاندانوں سے دلی ہمدردی اور گہرے دکھ وافسوس کا اظہار کیا ہے اور زخمی فوجیوں کی جلد صحت یابی کی دعاکی ہے۔