.

وزیراعظم عمران خان کی المسجدالحرام کے ائمہ کو دورۂ پاکستان کی دعوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے مکہ مکرمہ میں امامِ کعبہ الشیخ عبدالرحمان السدیس اور دوسرے ائمہ سے ملاقات کی ہے اور انھیں دورۂ پاکستان کی دعوت دی ہے۔

عمران خان سے ملاقات کرنے والے ائمہ میں الشیخ السعود الشریم ، الشیخ سعد شاطری اور الشیخ صالح حمید شامل تھے۔وزیراعظم نے ان سے گفتگو کرتے ہوئے عازمین حج وعمرہ کو شاندار سہولتیں مہیا کرنے پر خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔

انھوں نے بالخصوص کرونا وائرس کی وَبا کے پیش نظر حفاظتی احتیاطی تدابیر کے ساتھ الحرمین الشریفین میں زائرین اور عازمین کے لیے شاندار انتظامات کو سراہا۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستانی عوام الحرمین الشریفین کو خاص تقدس اور اہمیت دیتے ہیں۔انھوں نے اس امید کا اظہار کیاکہ معمول کے حالات جلد لوٹ آئیں گے اور تمام مسلمان المسجدالحرام کی رحمتوں اور برکتوں سے مستفید ہوسکیں گے۔

عمران خان نے امام کعبہ سے پاکستان کی ترقی اور خوش حالی اور پاکستانی عوام کی فلاح وبہبود کے لیے خصوصی دعائیوں کی درخواست کی ہے۔

امام کعبہ نے وزیراعظم کے اسلام فوبیا سے نمٹنے اور بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ کے لیے اقدامات کو سراہا۔ان کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں جہاں جہاں اردو بولنے اور سمجھنے والے لوگ موجود ہیں،وہیں عمران خان کی قیادت کے اثرات موجود ہیں۔

امام کعبہ الشیخ السدیس نے وزیراعظم کو ان کے سعودی عرب کے کامیاب دورے پر مبارک باد پیش کی اور کہا کہ سعودی عرب کے ائمہ اور علماء اس دورے کے اختتام پر جاری کردہ مشترکہ جامع بیان کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

ائمہ کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان اور وزیراعظم کے اقدامات کی کامیابی کے لیے دعاگو ہیں۔عمران خان نے المسجد الحرام کے ائمہ کو پاکستان کے دورے کی دعوت دی اور کہا کہ پاکستان کے عوام انھیں خصوصی عزت وتکریم کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور وطنِ عزیز میں ان کے خیرمقدم کے منتظر ہیں۔اس کے جواب میں ائمہ کا کہنا تھا کہ وہ بہت جلد پاکستان کا دورہ کریں گے۔

ملاقات میں پاکستان کے وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی ،وزیراعظم کے خصوصی نمایندہ برائے مذہبی ہم آہنگی طاہر اشرفی اور سیکریٹری خارجہ سہیل محمود بھی موجود تھے۔