.

برطانیہ نے پاکستان پر عاید سفری پابندیاں ختم کرتے ہوئے ریڈ لسٹ سے نکال دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ نے کرونا وائرس کی وجہ سے پاکستان پر عائد سفری پابندی ختم کرتے ہوئے اسے ریڈ لسٹ سے نکال دیا۔

اس بات کا اعلان پاکستان میں متعین برطانیہ کے ہائی کمشنر کرسچن ٹرنر نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر جاری ایک بیان میں کیا۔ برطانوی ہائی کمشنر کا کہنا تھا "مجھے یہ بتاتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے کہ پاکستان کو ریڈ لسٹ سے نکال دیا گیا ہے۔"

ہائی کمشنر نے اس حوالے سے سفری پابندیوں کی تفصیلات پر مبنی برطانوی حکومت کا ایک لنک بھی شیئر کیا جس میں پاکستان، ترکی سمیت دیگر کئی ممالک پر عائد سفری پابندیاں ختم کرنے سے متعلق بتایا گیا ہے۔

ریڈ لسٹ سے نکالے جانے کے بعد اب کرونا کی ویکسینیشن کروانے والے پاکستانیوں کو برطانیہ میں قرنطینہ نہیں کرنا پڑے گا جب کہ اس سے قبل برطانیہ جانے والے پاکستانیوں کو 10 روز تک قرنطینہ کرنا پڑتا تھا جس کا خرچہ بھی وہ خود برداشت کرتے تھے جو پاکستانی روپے میں سوا پانچ لاکھ بنتے تھے۔

واضح رہے کہ ریڈ لسٹ میں نام شامل کیے جانے کے بعد پاکستان نے کئی مرتبہ سفارتی سطح پر اس مسئلے کو اٹھایا جب کہ وزیراعظم عمران خان نے بھی اپنے برطانوی ہم منصب بورس جانس کو ٹیلی فون کر کے اس مسئلے پر توجہ مبذول کروائی۔