.

پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں مختلف کورسزکی پاسنگ آؤٹ پریڈ

پاس آؤٹ ہونے والوں میں سعودی عرب ،آذربائیجان، بحرین، عراق اور سری لنکا کے کیڈٹس بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں ہفتے کے روز مختلف کورسزکی پاسنگ آؤٹ پریڈ منعقد ہوئی۔سعودی عرب کی مسلح افواج کے چیف آف جنرل اسٹاف جنرل فیاض بن حامد تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ(آئی ایس پی آر )کے ایک بیان کے مطابق پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں 144 ویں لانگ کورس، 63 ویں انٹی گریٹڈ کورس، تیسرے بنیادی ملٹری ٹریننگ کورس اور 18ویں لیڈی کیڈٹس کورس مکمل کرنے والے مردوخواتین کیڈٹس پاس آؤٹ ہوئے ہیں۔ان میں آذربائیجان، بحرین، عراق، سعودی عرب اور سری لنکا کے کیڈٹس بھی شامل تھے۔

سعودی چیف آف جنرل سٹاف جنرل فیاض بن حامد نے تقریب کے آغاز میں پریڈ کا معائنہ کیا اور بعدازاں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کیڈٹس میں انعامات واعزازات تقسیم کیے۔ بٹالین سینیرانڈرآفیسرعثمان انور اعزازی شمشیرحاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں اور بٹالین سینئرانڈر آفیسر حمزہ نذیر نے صدارتی گولڈ میڈل حاصل کیا۔

سری لنکا کے سینئرانڈرآفیسر وان سنگلے ارچگے کو چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی گولڈ میڈل سے نوازا گیا، سعودی عرب کے جونیَرانڈر آفیسر رفیق عبداللہ الجنید کو کمانڈنٹ میڈل اور کورس انڈرآفیسروقار احمد اور کورس انڈر آفیسر حسن ابرار نے چیف آف آرمی سٹاف چھڑی حاصل کی۔کورس انڈرآفیسر حنا بخاری اور کورس انڈر آفیسرحور فاطمہ کو کمانڈنٹ کی اعزازی چھڑی سے نوازا گیا۔

نمایاں کارکردگی پر انعام حاصل کرنے والے کیڈٹس کا مہمان خصوصی کے ساتھ گروپ فوٹو
نمایاں کارکردگی پر انعام حاصل کرنے والے کیڈٹس کا مہمان خصوصی کے ساتھ گروپ فوٹو

پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے سعودی چیف آف جنرل اسٹاف نے کامیاب ہونے والے کیڈٹس اور ان کے والدین کو مبارک باد دی۔انھوں نے پاک فوج کی پیشہ ورانہ مہارتوں اور پی ایم اے میں عسکری تربیت کے اعلیٰ معیارکو سراہا۔

پی ایم اے کے ممتاز کیڈٹ بٹالین سینئرانڈر آفیسر عثمان انور نے اپنے تاثرات میں بتایا کہ ’’میراتعلق نوشکی بلوچستان سے ہے۔ میں نے ملٹری کالج سوئی سے تعلیم حاصل کی۔الحمد للہ آج مجھے اعزازی شمشیر سے نوازا گیا اور یہ لانگ کورس کے مجموعی طورپر بہترین کیڈٹ کو دی جاتی ہے۔یہ کامیابی میری محنت، والدین کی دعاؤں اور پی ایم اے کی فیکلٹی اور انسٹرکٹرز کی انتھک کوششوں کا نتیجہ ہے۔ انشا اللہ میں مستقبل میں بھی اسی جذبے اور لگن سے کام کروں گا تاکہ اپنی قوم کی امیدوں پر پورا اُتر سکوں۔‘‘

بٹالین سینئر انڈرآفیسر حمزہ نذیر نے بتایا کہ ’’میرا تعلق جہلم سے ہے۔ الحمدللہ آج مجھے پریذیڈنٹ گولڈ میڈل سے نوازا گیا جو کہ لانگ کورس کے مجموعی طور پر دوسرے بہترین کیڈٹ کو دیا جاتا ہے۔ یہ کامیابی مجھے مسلسل محنت، والدین کی دعاؤں اور پی ایم اے اور اس سے پہلے ملٹری کالج مری کے انسٹرکٹرز کی عمدہ تربیت کے باعث حاصل ہوئی ہے۔ میں اپنی قوم اور پاک فوج کے لیے ایک قابلِ فخراثاثہ بننا چاہتا ہوں۔‘‘

سری لنکا سے تعلق رکھنے والے سینئرانڈرآفیسر وان سنگلے نے اپنے تاثرات میں کہا کہ ’’میں نے کامیابی کے ساتھ یہاں اپنی دو سالہ تربیت مکمل کی ہے۔آج مجھے چیئرمین جائنٹ چئفس آف سٹاف کمیٹی بیسٹ اورسیز گولڈ میڈل سے نوازا گیا ہے۔ یہ میرے لیے بڑے اعزاز کی بات ہے کہ مجھے پاکستان ملٹری اکیڈمی جیسے عظیم ادارے سے یہ ایوارڈ ملا جس کا شمار دنیا میں عسکری تربیت کی بہترین اکادمیوں میں ہوتا ہے۔‘‘

انھوں نے کمانڈنٹ پی ایم اے میجر جنرل عمر احمد بخاری، پلاٹون کمانڈروں،فیکلٹی، اساتذہ، اپنے والدین اور اپنے تمام ساتھیوں کا شاندار مہمان نوازی پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ ناقابل فراموش خوشگوار واقعات کی حسین یادیں ساتھ لیے اپنے وطن لوٹ رہے ہیں۔

کورس انڈر آفیسروقار نے بتایا کہ ’’میرا تعلق جلال آباد، گلگت بلتستان سے ہے۔الحمدلِلہ مجھے آج چیف آف آرمی سٹاف چھڑی سے نوازا گیا ہے اور یہ کورس کے بہترین کیڈٹ کو دی جاتی ہے۔ میرا یہ اعزازوالدین کی دعاؤں اور اساتذہ کی بے پناہ کوششوں کا مرہون منت ہے۔‘‘

کورس انڈرآفیسرحور فاطمہ نے کہا کہ ’’الحمدللہ!مجھے اس اعزاز سے نوازا گیا جو کورس کی بہترین لیڈی کیڈٹ کو دیا جاتا ہے۔ پاک فوج خواتین کو زبردست مواقع فراہم کرتی ہے۔ پاک فوج میں قریباً 27فی صد خواتین ہیں جو کیپٹن سے لے کر لیفٹیننٹ جنرل تک مختلف حیثیتوں میں اپنی خدمات انجام دے رہی ہیں۔میں اسی جذبے اور لگن سے کام کرتی رہوں گی تاکہ میں قوم کی خدمت کرسکوں اور پاک فوج کی توقعات پر پورااتر سکوں۔‘‘