.

وزیر اعظم پاکستان کی 3 روزہ دورے پر سعودی عرب آمد، روضہ رسولﷺ پر حاضری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان سعودی ولی وعہد شہزادہ محمد بن سلمان کی دعوت پر سعودی عرب کے تین روزہ دورے پر مدینہ منورہ پہنچ گئے۔

سعودی دارلحکومت الریاض میں وزیر اعظم عمران خان ولی عہد محمد بن سلمان کی ہدایت پر ہونے والے مڈل ایسٹ گرین اقدامات سے متعلق سربراہی اجلاس میں شرکت کریں گے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر وزیر اعظم آفس کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان اور ان کے وفد کا مدینہ کے ڈپٹی گورنر سعود بن خالد الفیصل نے استقبال کیا۔ مدینہ آمد کے بعد وزیر اعظم جب جہاز سے باہر آئے تو وہ جوتوں کے بغیر ننگے پیر تھے۔

وزیر اعظم مسجد النبوی میں روضہ رسولﷺ پر حاضری دی اور نوافل ادا کیے۔ بعد وزیر اعظم عمرہ کی ادائیگی کے لیے مکہ روانہ ہوں گے۔

فوٹو بشکریہ ٹوئٹر اکاؤنٹ عمران خان
فوٹو بشکریہ ٹوئٹر اکاؤنٹ عمران خان

اس دورے کی دعوت وزیراعظم پاکستان کو سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے دی تھی۔ اس دورے میں ان کے ہمراہ ایک اعلیٰ سطح وفد بھی شامل ہے جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر توانائی حماد اظہر اور معاون خصوصی برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم سمیت کابینہ کے دیگر ارکان بھی شامل ہیں۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق ایم جی آئی سمٹ میں وزیر اعظم عمران خان ترقی پذیر ممالک کو موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے درپیش چیلنجوں سے متعلق اپنے نقطہ نظر سے آگاہ کریں گے۔ وزیر اعظم قدرتی طریقوں سےان چیلنجز سے نمٹنے کے لیے پاکستان کے تجربات سے سربراہی اجلاس کو آگاہ کریں گے۔

اس سے قبل دفتر خارجہ کے بیان کے مطابق وہ ماحولیاتی چیلنجز سے نمٹنے کے لیے پاکستان پر فطرت پر مبنی حل شروع کرنے کے تجربے کو بھی اجاگر کریں گے۔

 مدینہ کے ڈپٹی گورنر سعود بن خالد الفیصل نے عمران خان اور ان کے وفد کا  استقبال کیا
مدینہ کے ڈپٹی گورنر سعود بن خالد الفیصل نے عمران خان اور ان کے وفد کا استقبال کیا

علاوہ ازیں وزیر اعظم عمران خان دوطرفہ تعلقات کے فروغ، افرادی قوت کے لیے مواقع پر تبادلہ خیال کریں گے۔ عمران خان سعودی قیادت کے ساتھ دوطرفہ بات چیت کریں گے جس میں اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو آگے بڑھانے پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ دونوں فریق باہمی دلچسپی کے علاقائی اور بین الاقوامی مسائل پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔

دورے کے دوران وزیر اعظم پاکستان میں سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالے سے منعقدہ ایک تقریب میں شرکت کریں گے اور سعودی عرب اور مملکت میں پاکستانی سرمایہ کاروں اور تاجروں کے ساتھ بات چیت کریں گے۔