.

سعودی سرسبز اقدام، پاکستان کے موسمیاتی تبدیلی منصوبوں سے ہم آہنگ ہے: عمران خان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سرسبز اقدامات کو قابل عمل بنانے کے لئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی سرسبز اقدام اور مشرقی وسطیٰ شاداب اقدام پاکستان کے موسمیاتی تبدیلی اقدام، صاف و سرسبز پاکستان اور 10بلین ٹری سونامی سے ہم آہنگ ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو ریاض میں مشرق وسطیٰ شاداب اقدام سربراہ اجلاس کے موقع پر سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب کی ترقی کے لئے خادم الحرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی قیادت کو سراہا۔ انہوں نے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے سعودی وژن 2030کی بھی تعریف کی جس کا مقصد اکیسویں صدی میں سعودی عرب میں سماجی و معاشی ترقی لانا ہے۔

وزیر اعظم نے ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق مشرقی وسطیٰ شاداب اقدام سربراہ اجلاس کی کامیابی سے انعقاد پر ولی عہد کو دلی مبارکباد دی۔ انہوں نے کہاکہ یہ سربراہ اجلاس ماحولیاتی تبدیلی کے چیلنج سے مؤثر انداز سے نمٹنے کے لئے نمایاں اقدامات کے لئے سعودی عرب کی قیادت کے عزم کا عکاس ہے۔

وزیر اعظم نے کہاکہ سعودی عرب کا سرسبز اقدام اور مشرقی وسطیٰ شاداب اقدام پاکستان کے موسمیاتی تبدیلی اقدام، صاف و سرسبز پاکستان اور 10ارب ٹری سونامی سے ہم آہنگ ہیں۔ انہوں نے ان سرسبز اقدامات کو قابل عمل بنانے کے لئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا۔

وزیراعظم نے سعودی عرب کے ساتھ پاکستان کے گہرے دوستانہ تعلقات کے عزم کا اعادہ کیا اور سعودی عرب کے ساتھ پاکستان کے سٹریٹجک تعلقات کو اجاگر کیا۔ وزیراعظم نے ہر مشکل گھڑی میں پاکستان کی فوری امداد پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کیا۔

دونوں رہنمائوں نے مختلف شعبوں میں باہمی تعاون مزید مستحکم بنانے پر اتفاق کیا۔ افغانستان میں حالیہ صورتحال سے متعلق وزیر اعظم نے افغان عوام کی مشکلات کے خاتمے اور ان کی مدد کے لئے بین الاقوامی برادری کی فعال اور تعمیری کردار کی اہمیت پر زور دیا ۔

انہوں نے افغانستان میں تباہ کن انسانی صورتحال پر تشویش ظاہر کی اور امید ظاہر کی کہ عالمی برادری افغانستان میں انسانی بحران اور معاشی تباہی سے بچنے کے لئے فوری اقدامات کرے گی۔ دونوں رہنمائوں نے ان چیلنجز سے نمٹنے کے لئے قریبی مربوط کوششوں پر اتفاق کیا۔

پاکستان اور سعودی عرب باہمی اعتماد ، مفاہمت، قریبی تعاون، ایک دوسرے کی مدد کی روایت پر مبنی دوستانہ تعلقات میں بندھے ہیں۔ وزیر اعظم کا رواں سال سعودی عرب کا یہ دوسرا دورہ ہے انہوں نے اس سے قبل مئی 2021میں سعودی عرب کا دورہ کیا۔