پاکستان اور خلیج تعاون کونسل کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات

فریقین کا سٹریٹجک ڈائیلاگ کے لیے مشترکہ ایکشن پلان کو حتمی شکل دینے پر اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان اور خلیج تعاون کونسل [جی سی سی] کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات بدھ کو وزارت خارجہ میں ہوئے۔ وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی پاکستانی جبکہ سیکرٹری جنرل ڈاکٹر نایف فلاح ایم الحجراف جی سی سی کے وفد کی قیادت کر رہے تھے۔

فریقین نے سٹریٹجک ڈائیلاگ (2022-2026) کے لیے مشترکہ ایکشن پلان کو حتمی شکل دینے پر اتفاق کیا۔ دفتر خارجہ کے مطابق وفود کی سطح پر ہونے والی بات چیت کے دوران، دونوں فریقین نے مختلف شعبوں میں پاکستان۔جی سی سی تعاون کا جائزہ لیا ۔

وزیر خارجہ نے سیکرٹری جنرل جی سی سی اور وفد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ جی سی سی میں شامل رکن ملکوں کے ساتھ پاکستان کے پائیدار برادرانہ اور تاریخی تعلقات ہیں جو مشترکہ عقیدے، اقدار اور ثقافت کی بنیاد پر استوار ہیں۔ وزیر خارجہ نے پاکستان اور جی سی سی ریاستوں کے درمیان دو طرفہ تعاون کے فروغ کیلئے باہمی فائدہ مند شراکت داری کے لیے نئی راہیں تلاش کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی جی سی سی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر نایف فلاح ایم الحجرافل
وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی جی سی سی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر نایف فلاح ایم الحجرافل

مذاکرت کے دوران علاقائی پیش رفت بالخصوص مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں اور افغانستان میں موجودہ بحرانی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔پاکستان اور جی سی سی کے درمیان سٹریٹجک ڈائیلاگ پر مفاہمت کی یادداشت کے مطابق، دونوں فریقین نے سٹریٹجک ڈائیلاگ (2022-2026) کے لیے مشترکہ ایکشن پلان کو حتمی شکل دینے پر اتفاق کیا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ یہ ایکشن پلان، سیاسی مشاورت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے لیے ادارہ جاتی نقطہ نظر کی فراہمی میں معاون ثابت ہو گا۔

مشترکہ ایکشن پلان سے پاکستان اور جی سی سی ممالک کے مابین سکیورٹی؛ تجارت سرمایہ کاری؛ زرعی و فوڈ سکیورٹی؛ توانائی؛ ماحولیات، صحت؛ ثقافت اور تعلیم کے شعبوں میں دو طرفہ تعاون میں اضافہ ہو گا۔ سٹریٹجک ڈائیلاگ کے لیے مشترکہ ایکشن پلان کو حتمی شکل دینے کا خیر مقدم کرتے ہوئے، وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی اور سیکرٹری جنرل الحجراف نے توقع ظاہر کی کہ ایکشن پلان پاکستان اور جی سی سی ریاستوں کے درمیان تعاون کو بہتر بنانے میں معاون ثابت ہو گا۔

پاکستان اور جی سی سی کے درمیان آزادانہ تجارت کے معاہدے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لیے جاری کوششوں پر پیش رفت کا ذکر کرتے ہوئے وزیر خارجہ اور سیکریٹری جنرل جی سی سی نے مذاکرات کو ترجیحی بنیادوں پر پایہ تکمیل تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کیا۔

وزیر خارجہ نے 19 دسمبر 2021 کو اسلام آباد میں منعقدہ او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کے 17ویں غیر معمولی اجلاس میں شرکت اور افغانستان کے عوام کے حمایت کے اظہار پر سیکرٹری جنرل جی سی سی کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ عالمی برادری، افغانستان میں انسانی بحران سے نمٹنے اور معاشی صورتحال کو مستحکم بنانے میں معاونت کیلئے آگے بڑھے۔

سیکرٹری جنرل جی سی سی ڈاکٹر نایف فلاح ایم الحجراف نے پرتپاک خیر مقدم اور پر خلوص میزبانی پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کا شکریہ ادا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں